The news is by your side.

Advertisement

مارگلہ ہلز پر آگ کے قریب ٹک ٹاک ویڈیو بنانے والی خاتون کے خلاف مقدمہ درج

اسلام آباد: مارگلہ ہلز پر آگ کے قریب ویڈیو بنانے والی خاتون کے خلاف مقدمہ درج کرلیا، جس میں کہا کہ خاتون جنگل میں آگ لگا کر ویڈیو شوٹ کروارہی تھی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت کے مارگلہ ہلز پر آگ کے قریب ٹک ٹاک ویڈیو بنانے والی خاتون کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

مقدمہ تھانہ کوہسار میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر شعبہ ماحولیات کی مدعیت میں درج کیا گیا، جس میں کہا ہے کہ سوشل میڈیا پر ڈولی نامی ٹک ٹاکر کی ویڈیو گردش کررہی ہیں، خاتون جنگل میں آگ لگاکرویڈیو شوٹ کروارہی تھی۔

مقدمے میں کہا گیا ہے کہ مارگلہ ہلز نیشنل پارک کا علاقہ ہے، کچھ دنوں سے آگ کے متعدد واقعات ہوئے۔

اس سے قبل مارگلہ ہلز میں آگ لگا کر خاتون کی ٹک ٹاک ویڈیو بنانے پر ٹک ٹاکر کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست دی تھی۔

اسسٹنٹ ڈائریکٹر ماحولیات سی ڈی اے کی جانب سے درخواست دی گئی،جس میں کہا کہ ٹک ٹاکر ڈولی کی جنگل میں آگ لگا کر ٹک ٹاک ویڈیو وائرل ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ مارگلہ ہلز میں آگ لگنےکےمتعدد واقعات رونما ہوچکے ہیں، لینڈ اسکیپ ایکٹ ،انوائرمنٹ پروٹیکشن ایکٹ کےتحت مقدمہ درج کیا جائے۔

ڈائریکٹر جنرل انوائرمنٹ سی ڈی اے کا کہنا ہے کہ درختوں اورپودوں میں پرندےاورجانوررہتےہیں، کچھ دن پہلے جنگل میں آگ لگی، جنگل میں کوئل کاگھونسلہ بھی تھا،ریسکیو رضاکار نے گھونسلے کو وہاں سے اٹھایا۔

عرفان نیازی نے کہا تھا کہ ٹک ٹاکراپنی ویڈیوکیلئےبالکل خیال نہیں کرتے، قانونی کارروائی کی جائے گی، جس میں جرمانے اور سزائیں بھی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں