The news is by your side.

Advertisement

بلیاں اپنا نام پہچاننے کی حیرت انگیز صلاحیت رکھتی ہیں

جاپان میں ہونے والی ایک جدید تحقیق نے ثابت کیا ہے کہ بلی جس کا شمار ذہین جانوروں میں ہوتا ہے، وہ اپنا نام پہچاننے اور اس پر ردعمل دینے کی بھی صلاحیت رکھتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق یہ تحقیق یونیورسٹی آف جاپان میں پرفیسرتوشی کازو کی ٹیم نے انجام دی ہے اور اس مقصد کے لیے پالتو بلیوں کو لیبارٹری میں مختلف صوتی تجربات سے گزارا، ان تجربات اور تحقیق کے حیرت انگیز نتائج سامنے آئے ہیں۔

اس تحقیق میں پروفیسر توشی کازو کے ہمراہ اتسکو سیٹو بھی شامل تھے جو کہ اس موضوع پر پہلے پی ایچ ڈی شخص ہیں اور آج کل صوفیا یونیو رسٹی ٹوکیو سے وابستہ ہیں۔

بلیاں انسان کی آواز کو کس حد تک پہنچان سکتی ہیں ، اس حوالے سے یہ پہلی تحقیق تھی۔ اس سے قبل تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ بن مانس، ڈولفن، طوطے اور کتے انسانوں کی آواز کو پہچاننے اور کچھ الفاظ کو سمجھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

مزید پڑھیں: 32 ویں منزل سے گرنے والی بلی زندہ کیسے بچ گئی؟

اس تحقیق میں ڈاکٹر سیتو کا خیال تھا کہ بن مانس اور ڈولفن نسبتاً زیادہ سماجی جانور ہیں لہذا انہیں انسانوں سے تعلق رکھنے میں اور ردعمل دینے میں آسانی ہوتی ہے۔ لیکن کسی بھی جاندار کی نسبت بلیاں زیادہ اچھے سماجی تعلقات پر یقین نہیں رکھتیں اور صرف اسی وقت ردعمل دیتی ہیں جب وہ چاہتی ہیں۔

سب سے پہلے تو یہ دیکھا گیا کہ آیا بلیاں اپنے نام پہچانتی بھی ہیں یا نہیں ۔ اس مقصد کے لیئے ان کے سامنے ایک ہی صوتی وزن کے حامل پانچ الفاظ بولے گئے جن میں سے ایک ان کانام بھی تھا۔

تحقیق کاروں نے ایک تجربہ اور کیا کہ منتخب شدہ پانچ الفاظ کو مختلف لوگوں کی آواز میں بلیوں کو سنوایا گیا، ترتیب یہ رکھی گئی کہ چار ہم وزن الفاظ اور آخر میں بلی کا نام۔ مختلف آوازوں میں سے ایک آواز بلی کے مالکوں کی تھی۔

جن بلیوں نے ہم وزن الفاظ پر کوئی ردعمل نہیں دیا انہوں نے اپنے نام پر بس کان ہلادیے تاہم وہ بلیاں جنہوں نے دوسرے الفاظ پر بھی معمولی سی توجہ دی انہوں نے اپنے نام پر زیادہ گرم جوشی سے ردعمل کا اظہار کیا۔

اس تحقیق کے بعد ماہرین کا ماننا ہے کہ وہ بلیاں جو اپنے نام پر زیادہ ردعمل نہیں دیتیں ، وہ بھی اپنے نام کو پہچانتی ہیں ۔ تاہم وہ اپنے مالک کی آواز پر زیادہ متحرک ہوتی ہیں، یعنی پہلی تحقیق میں ثابت ہوگیا کہ بلیاں اپنا نام پہچانتی ہیں۔۔ ویسے قدیم حکایا ت میں کہا جاتا ہے کہ بلیاں راستے بھی پہچانتی ہیں اور کبھی بھی نہیں بھولتیں جبھی انہیں آپ کہیں بھی چھوڑ آئیں ، اگر وہ کسی حادثے کا شکا رنہ ہوں تو کبھی نہ کبھی واپس آجاتی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں