The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان کے لوگ نقل مکانی کرگئے، مردم شماری معطل کی جائے، اختر مینگل

کراچی: سابق وزیراعلیٰ اور بلوچستان اور نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل نے کہا ہے کہ بلوچستان میں گذشتہ کئی سالوں سے جاری آپریشن کے باعث لوگ بڑی تعداد گھر بار چھوڑ کر دوسرے مقامات پر چلے گئے ہیں اس لیے وہاں مردم شماری کو معطل کیا جائے۔

کراچی میں حیدر منزل پر سندھ یونائیٹیڈ پارٹی کے سربراہ جلال محمود شاہ کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں سردار اختر مینگل کاکہنا تھا کہ بلوچستان میں گزشتہ پندرہ سالوں دہشت گردی کے خلاف آپریشن جاری ہے جس کے باعث مکینوں کی بڑی تعداد نقل مکانی کرگئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں ایسے علاقے بھی ہیں جہاں کوئی موجود نہیں ،مردم شماری کے ذریعے لوگوں کی اصل تعداد جاننا ضروری ہے، لہذا حالات کی بہتری کے بعد بلوچستان میں مردم شماری کی جائے ۔

نیشنل پارٹی کے سربراہ نے کہا کہ سی پیک اور مردم شماری پر کسی کو اعتراض نہیں تاہم مردم شماری کے ذریعے لوگوں کی اصل تعداداور زمینی حقائق جاننا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ 57 ارب میں سے صرف ایک ارب روپے بلوچستان پر خرچ کیا جارہا ہے، جبکہ ابھی بھی بلوچستان کے اکثر علاقوں میں توانائی ،گیس اور صاف پانی فراہم نہیں کیا جارہا۔

سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان نے مطالبہ کیا کہ شہریت ،ووٹ اور ملکیت خریدنے کا حق مقامی لوگوں کو دیا جائے ، غیر ملکی مہاجرین کو جو نادرا کا پاسپورٹ جاری کیا گیا ہے اسے ختم کیا جائے اوردہشت گردی کے خاتمے میں وفاق کی داخلہ اور خارجی پالیسی میں صوبوں کو اعتماد میں لیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں