The news is by your side.

Advertisement

سنٹرل پنجاب نے سیکنڈ الیون کپ جیت لیا

قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلے گئے آخری لیگ میچ میں سنٹرل پنجاب نے ناردرن کو 7 وکٹوں سے شکست دے کر نیشنل ٹی ٹونٹی کپ سیکنڈ الیون کا ٹائٹل اپنے نام کرلیا ہے۔ ایونٹ کے5 میں سے 4میچوں میں فتوحات کے بعد سنٹرل پنجاب نے 8 پوائنٹس کے ساتھ پوائنٹس ٹیبل پر پہلی پوزیشن حاصل کرکے ٹائٹل اپنے نام کرلیا۔

ٹاپ رینک ٹیم نے جمعرات کو کھیلے گئے ایونٹ کے آخری لیگ میچ میں جنید علی کےناقابل شکست 66 رنز کی بدولت 134 رنز کا ہدف 3 وکٹوں کے نقصان پر حاصل کرلیا۔ کپتان نعمان انور 13 گیندوں پر 26 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔ ناردرن کے اطہر محمود نے 2وکٹیں حاصل کیں۔

اس سے قبل ناردرن نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کافیصلہ کیا تو انہوں نے مقررہ بیس اوورز میں 8 وکٹوں کے نقصان پر 133 رنز بنائے۔عامر جمال ناٹ آؤٹ 38 رنز بناکر ٹاپ اسکورر رہے۔وقاص مقصود نے 3 اور محمد علی نے 2وکٹیں حاصل کیں۔

کپتان سنٹرل پنجاب نعمان انور نے کہا کہ کورونا وائرس کے سخت پروٹوکولز میں کرکٹ کے معیاری مقابلوں میں شرکت ایک خوش آئند تجربہ رہا۔ انہوں نے کہا کہ سنٹرل پنجاب کی خاصیت بہترین کمبی نیشن اور اسکواڈ میں شامل ہر کرکٹر کی جانب سے ذمہ دارانہ کھیل کا مظاہرہ کرنا تھا۔نعمان انور نے مزید کہا کہ ایونٹ میں تمام ٹیمیں بہترین تھیں، جس کی وجہ سے بہت سخت مقابلے ہوئے مگر روایتی حریف سندھ کے خلاف میچ آخری اوور تک گیا، جس میں کامیابی اس ایونٹ میں ان کی بہترین یاد رہے گی۔

سنٹرل پنجاب کے ہیڈ کوچ اکرم رضا نے کہا کہ ایونٹ کے آغاز سے قبل منعقدہ پریکٹس کیمپ نے ان کھلاڑیوں کو کوویڈ 19 کی صورتحال میں اعصابی طور پر مزید مضبوط بنانےمیں بہت مددکی۔ انہوں نےکہا کہ وہ گزشتہ سال بھی ان میں سے اکثر لڑکوں کے ساتھ کام کرچکے ہیں، جس کا بہت فائدہ ہوا۔

اکرم رضا نے کہا کہ وہ اپنی ٹیم کے سب سے نمایاں کرکٹر محمد اخلاق کے فرسٹ الیون اسکواڈ میں شمولیت پر بہت خوش ہیں۔ انہوں نے محمد اخلاق کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتےہوئے کہا کہ دائیں ہاتھ کے بیٹسمین بہت باصلاحیت کرکٹر ہیں اور انہیں یقین ہے کہ وہ فرسٹ الیون ٹورنامنٹ میں بھی شاندارکارکردگی کا مظاہرہ کریں گے۔

ایونٹ کے اختتام پر سنٹرل پنجاب کی ٹیم 8 پوائنٹس کے ساتھ پہلے، خیبرپختونخوا اور سدرن پنجاب 6،6 پوائنٹس کے ساتھ بالترتیب دوسرے اور تیسرے جبکہ سندھ چوتھے، بلوچستان پانچویں اور ناردرن چھٹے نمبر پر رہی۔

بلوچستان کے سترہ سالہ بیٹسمین عبدالواحد بنگلزئی نے سب سے زیادہ 235 رنز جبکہ سنٹرل پنجاب کے کامران افضل نے 8 وکٹیں حاصل کیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں