The news is by your side.

Advertisement

اسلام کی بات کرنے پر کچھ جماعتیں مجھ سے پریشان ہیں، چوہدری نثار

راولپنڈی: وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ مسلمانوں کے لیے کھڑے ہونا میرا ایمان کا حصہ ہے، حرام کھاتا ہوں اور نہ ہی کسی کو اس کی اجازت دیتا ہوں، اسی بات پر کچھ لوگ اور  جماعتیں مجھ سے پریشان رہتی ہیں، تبدیلی کی باتیں کرنے والوں کے گرد کرپٹ لوگ کھڑے ہیں۔

چکری میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ امریکی لیڈروں سے کہا دہشت گردی مسلمانوں کی وجہ سے نہیں بلکہ وہ خود اس سے کا بڑا شکار ہیں، مغربی ممالک ہر داڑھی والے شخص اور حجاب والی خاتون کو دہشت گرد سمجھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے لیے کھڑے ہونا میرے ایمان کا حصہ ہے، اسلام کی بات کرنے پر کچھ سیکولر اور لبر ل جماعتیں  مجھ سے پریشان ہیں میں اُن پر واضح کرنا چاہتا ہوں کہ آپ سیکولر ازم کی بات کریں گے تو میں بھی اسلام پسند ہوں اور ہر اُس شخص کی حمایت کروں گا جو اسلام کے لیے کام کرتا ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ گزشتہ 35 سال سے سیاست میں ہوں بہت سے لوگوں نے خریدنے کی کوشش کی مگر کبھی اپنے ضمیر کا سودا نہیں کیا بلکہ ہمیشہ پاکستان کے مفاد میں بات کی اور پارٹی قیادت کے سامنے بھی ڈٹ گیا۔

چوہدری نثار نے کہا کہ جھوٹ، دھوکا، جعلسازی کسی صورت برداشت نہیں کرتا اس لیے ہمیشہ دوٹوک مؤقف اختیار کیا، جن کے دائیں بائیں کرپٹ لوگ کھڑے ہیں وہ ملک میں تبدیلی کا نعرہ لگا رہے ہیں۔

لیگی رہنماء نے مزید کہا کہ تبدیلی کی بات کرنے والے اپنے ارد گرد ریکارڈ کرپشن کرنے والوں کو جمع کر کے نہ جانے کس تبدیلی کی بات کررہے ہیں، ایسے نعرے محض عوام کو بے وقوف بنانے کے لیے ہے کیونکہ ملکی ترقی دھرنوں یا نعروں سے نہیں عمل اور سی پیک سے آئے گی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں