کل ڈی چوک کو میڈیا کی موجودگی میں خالی کرائیں گے، چوہدری نثار -
The news is by your side.

Advertisement

کل ڈی چوک کو میڈیا کی موجودگی میں خالی کرائیں گے، چوہدری نثار

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثارعلی خان نے کہا ہے کہ چہلم کے شرکاء سے معاملات ایک گھنٹے میں حل نہ ہوئے تو ڈی چوک کل دن کی روشنی میں میڈیا کی موجودگی میں خالی کرائیں گے۔

انہوں نے دھرنے والوں سے مذاکرات کی بھی تردید کردی۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ نے خاموشی توڑ دی، اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی چوک پر احتجاج کرنے والوں کو وارننگ دے دی۔

انہوں نے کہا کہ مظاہرین کے رہنماﺅں کی خواہش ہے کہ انہیں سیاست کیلئے کوئی لاش مل جائے لیکن حکومت ان کے عزائم کامیاب نہیں ہونے دے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ چہلم کے شرکا نے زبانی اور تحریری طور پر پنجاب حکومت کو یقین دہانی کرائی کہ چہلم کی دعاکے بعد واپس چلے جائیں گے لیکن پھر اچانک کچھ ہوا اور ان لوگوں نے اپنے وعدے کا پاس نہیں کیا ۔

مظاہرین نے پنجاب حکومت کو دھمکی دی اور مطالبات سامنے رکھ دیے اور اس کے بعد ہزاروں لوگوں کو اسلام آباد کی طرف لے کر چل پڑے۔

انہوں نے کہا کہ مظاہرین سے حکومت کی سطح پر مذاکرات نہیں ہونگے، چوہدری نثار نے کہا کہ املاک کو نقصان پہنچانے والوں کی ویڈیوز حاصل کرلی ہیں، ان کو چن چن کر گرفتارکیاجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ڈی چوک میڈیا کی موجودگی میں خالی کرائیں گے۔ چوہدری نثار نے کہا کہ حکومت کے لیے آپریشن کرنا مشکل کام نہیں ہے ،ایک آرڈر پر آپریشن کے ذریعے ان لوگوں کو ڈی چوک سے ہٹا جا سکتا ہے مگر ہم ان کو کوئی ایسا موقع نہیں دیں گے۔

کارروائی میں سیکیورٹی فورسزکو غیر مسلح رکھا جا ئے گا، ان کا کہنا تھاکہ وزارت داخلہ نے ایک کمیٹی تشکیل دے دی ہے جو انتظامیہ کی کوتاہی دیکھے گی جن کی وجہ سے یہ لوگ اسلام آباد میں داخل ہوئے ۔

انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے ہم نے پنجاب حکومت کے ساتھ انٹیلی جنس رپورٹس شیئر کیں جس پر صوبائی حکومت جوابدہ ہے۔

چوہدری نثار نے موبائل فون سروس کی بندش پرمعذرت کرتے ہوئے کہا کہ موبائل فون سروس جلد بحال ہوناشروع ہوجائے گی۔

چوہدری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ کارروائی میں ایک شخص کو ہینڈ ل کرنے کے لئے چھ پولیس اہلکار حصہ لیں گے۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں