The news is by your side.

Advertisement

حکومت خود کو احتساب کے عمل سے مکمل طور پر الگ کرے، چوہدری نثار

راولپنڈی : سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ حکومت اپنے آپ کو احتساب کے عمل سے مکمل طور پر الگ کرے، نوازشریف کو مشورہ دیاتھا لیکن انہوں نے نہیں مانا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے راولپنڈی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ سابق وزیر داخلہ نے کہا کہ احتساب کے سلسلے کو حکومت نے خود متنازعہ بنایا ہے، نیب ایک خود مختار ادارہ ہے اگر وہ آزادی سے کام کرنے دیتی تو آج یہ حالات نہیں ہوتے۔

انہوں نے کہا کہ آپ سب کو چور اور ڈاکو سمجھتے ہیں، احتساب ہونا چاہیے لیکن سیاست کی نظر نہیں ہونا چاہیے، حمزہ شہباز والا معاملہ حکومت نے خود متنازعہ بنایا، حکومت اپنے آپ کو احتساب کے عمل سے مکمل طور پر الگ کرے۔

چوہدری نثار نے مزید کہا کہ میں ایسا کوئی کام نہیں کرتا جو میرے ضمیر پر بوجھ ہو، مجھے ووٹ دینے والے اطمینان رکھیں ان کے ساتھ دونمبری نہیں ہوگی، اقتدار میں نہیں مگر ہر قدم اپنے حلقے کی عوام کے ساتھ ہوں، ہمیشہ ضمیر کی آواز سنی اقتدار کا لالچ نہیں ہے، اقتدار ہو یا اپوزیشن ہمیشہ عزت کے ساتھ رہا، کسی عہدے کا امیدوار نہیں ہوں۔

انہوں نے کہا کہ میں پہلے بھی کہتا رہا ہوں کہ اس ملک کو بہت سنجیدہ خطرات کا سامنا ہے،ہم ان خطرات سے بے خبر ہیں۔ سات ارب روپے روزانہ قرض لے کر ملک چلا رہے ہیں، یہ قرضوں کا گرداب ہے مگر سب اسی طرح چل رہے ہیں۔

چوہدری نثار علی کا کہنا تھا کہ میرا عمران خان کو مشورہ ہے کہ خدا کے واسطے غیر روایتی وزیراعظم بنیں، ذمہ داری عمران خان اور ان کی ٹیم کی ہے، قوم کو سہانے خواب نہ دکھائیں، نواز شریف کو بھی مشورہ دیا تھا لیکن انہوں نے نہیں مانا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں