The news is by your side.

Advertisement

چیئرمین اور صدر نیشنل بینک کو عدالتی ریلیف مل گیا

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ سے صدر نیشنل بینک عارف عثمانی اور چیئرمین نیشنل بینک زبیر سومرو کو بڑا ریلیف مل گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزارت خزانہ، نیشنل بینک کی جانب سے ہائی کورٹ کے سنگل رکنی بینچ کے خلاف انٹرا کورٹ اپیلوں پر سماعت ہوئی، مخدوم علی خان عدالت میں نیشنل بینک کی جانب سے پیش ہوئے، چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ اطہر من اللہ اور جسٹس عامر فاروق پرمشتمل ڈویژن بینچ نےسماعت کی۔

دوران سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ کے ڈویژن بینچ نے سنگل رکنی بینچ کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے صدر نیشنل بینک عارف عثمانی اور چیئرمین نیشنل بینک زبیر سومرو کو ان کے عہدوں پر بحال کرنے کا حکم دے دیا۔

فیصلے سے قبل اٹارنی جنرل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ عارف عثمانی اور زبیر سومرو سنگل رکنی بینچ کے فیصلے سے متاثر ہوئے، نیشنل بینک کے صدر کا عہدہ پرکرنےکے لیے اشتہار کی ضرورت نہیں تھی، سنگل رکنی بینچ نے ٹھیک سے کیس سنا ہی نہیں۔

یہ بھی پڑھیں: اسلام آباد ہائی کورٹ کا چیئرمین اور صدر نیشنل بینک کو فوری عہدوں سے ہٹانے کا حکم

اٹارنی جنرل خالدجاوید خان نے اپنے دلائل میں کہا کہ مخدوم علی خان کی موجودگی میں زیادہ دلائل کی ضرورت نہیں ہوگی، نیشنل بینک کے وکیل مخدوم علی خان نے اپنے دلائل میں کہا کہ نیشنل بینک کے صدر اور چیئرمین اپنے عہدے کے اہل ہیں۔

واضح رہے کہ گذشتہ ماہ کی انتیس تاریخ کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے سنگل بینچ نے صدر نیشنل بینک عارف عثمانی اور چیئرمین نیشنل بینک زبیر سومرو کو نااہلی قرار دیتے ہوئے فوری عہدے سے ہٹانے کا حکم دیا تھا، جس کے خلاف وزارت خزانہ اور نیشنل بنک نے چار، 4 الگ الگ انٹرا کورٹ اپیلیں دائر کیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں