The news is by your side.

Advertisement

تمام صنعتی صارفین کوٹیکس نیٹ میں لائیں گے،چیئرمین ایف بی آر کا عزم

اسلام آباد : چیئرمین ایف بی آر شبرزیدی نے کہا تمام صنعتی صارفین کوٹیکس نیٹ میں لائیں گے، ماضی کے واجبات پر صرف دو فیصد ٹیکس مانگ رہے ہیں، ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے والوں کو ٹیکس ریٹرن جمع کروانا لازمی ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں چیئرمین ایف بی آر شبرزیدی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ڈسکوز کے پاس رجسٹرڈ صارفین کی تعداد 3 لاکھ 48ہزار ہے، ملک میں ٹیکس فائلرزکی تعدادکم ہے، ہمیں کاروبار کے لیے پہلے بہترماحول مہیا کرنا ہے، اس میں ٹیکس وصولی کی بات بعد میں آئےگی۔

چیئرمین ایف بی آر کا کہنا تھا بجلی کےصنعتی صارفین کی تعداد3لاکھ71ہزار304ہے، سکیم کی مدت میں ابھی وقت ہے،دیکھتےہیں کیاردعمل آتاہے، ڈسکوزکی سطح پر مینوفیکچررز کا ڈیٹاجمع کررہے ہیں۔

اثاثے ظاہرکرنے پر ٹیکس ریٹرن بھرنے کی شرط عائد ہے

شبرزیدی نے کہا ہراسمنٹ سے روکنےپرآپ بتائیں مزیدکیاکروں، میں پہلے ہی اس پر3حکم جاری کرچکاہوں ، قانون میں کوئی کمی ہے تو بیٹھ کر دیکھیں گے ، اثاثے ظاہر کرنےکی اسکیم میں فائلر کی شرط لازم عائد کی جائے گی۔

ان کا کہنا تھا نان کسٹم پیڈگاڑیوں کے لیے ابھی کوئی اسکیم نہیں ، ماضی کے واجبات پر صرف 2 فیصدٹیکس مانگ رہے ہیں، اثاثے ظاہرکرنے پر ٹیکس ریٹرن بھرنے کی شرط عائد ہے۔

مزید پڑھیں : چند خام مال پر تو ٹیکس چھوٹ دی جا سکتی ہے سب پر نہیں: شبر زیدی

چیئرمین ایف بی آر نے کہا ایک نکاتی ایجنڈا ہے تمام صنعتی صارفین کو ٹیکس نیٹ میں لائیں، 31 لاکھ تجارتی صارفین ہیں، ٹیکس نادہندگان کے اکاؤنٹ منجمد کرنے کا اختیار ابھی بھی ہمارے افسر کے پاس ہے، 24 گھنٹے میں مطلع کیے بغیر اکاؤنٹ منجمد نہیں کیا جائے گا۔

شبرزیدی کا کہنا تھا سیلز ٹیکس کی رجسٹریشن کو آرڈیننس میں شامل کر رہے ہیں، ملک میں 3 لاکھ 41 بجلی کے صنعتی صارفین ہیں، سوئی گیس کمپنیوں کے7 ہزار صنعتی صارفین ہیں، ملک میں رجسٹر صنعتی سیلز ٹیکس صرف 38 ہزار ہیں۔

ایک لاکھ کمپنیاں رجسٹر ہیں اور ٹیکس فائلر 50 ہزار سے بھی کم ہیں

انھوں نے مزید کہا اسکیم میں سیلز ٹیکس کی رجسٹریشن کرانی ہوگی، اسکیم میں 2 فی صد ٹیکس دےکر سیلز ٹیکس رجسٹریشن کرانا ہوگی، اسکیم کا وقت 30 جون کو ختم ہوگا تو ان کے خلاف کارروائی ہوگی، ایک لاکھ کمپنیاں رجسٹر ہیں اور ٹیکس فائلر 50 ہزار سے بھی کم ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں