The news is by your side.

بدعنوانی کا خاتمہ ہمارا ایمان ہے، کرپشن فری پاکستان کیلئے کوشاں ہیں،چیئر مین نیب

لاہور : چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاویداقبال کا کہنا ہے کہ بدعنوانی کاخاتمہ ہماراایمان ہے،کرپشن فری پاکستان کے لیے کوشاں ہیں ،نیب پراعتماد سازی میں اضافہ ہوا، شفافیت کوفروغ دینے میں مددملی ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاویداقبال کی زیرصدارت نیب ہیڈکواٹرز میں اجلاس ہوا، اجلاس میں نیب کے تمام علاقائی بیوروز کی مجموعی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔

چیئر مین نیب نے کہا بدعنوانی کا خاتمہ ہمارا ایمان ہے، کرپشن فری پاکستان کے لئے کوشاں ہیں، اشتہاریوں، مفروروں اور بدعنوان عناصر کو قانون کے کٹہرے میں لائیں گے۔

جاویداقبال کا کہنا تھا کہ نیب بدعنوانی کے خاتمے کو قومی ذمہ داری سمجھتا ہے، بہترین صلاحیتوں کااستعمال کرتے ہوئے کرپشن فری پاکستان کے لئے کوشاں ہیں۔

چیئر مین نیب نے نیب حکام کوہدایت کی میگا کرپشن کے مقدمات کو ترجیحی بنیادوں پرمنطقی انجام تک پہنچایاجائے، کم مالیت کے مقدمات کو متعلقہ اینٹی کرپشن کے اداروں کو بھجوایاجائے، شفافیت ، شواہد پر 10ماہ کے مقررہ وقت کے اندر کیس انجام تک پہنچائیں اور مقررہ وقت کے اندرشکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریاں کی جائیں۔

میگا کرپشن کے مقدمات کو ترجیحی بنیادوں پرمنطقی انجام تک پہنچایاجائے

چیئرمین نیب

ان کا کہنا تھا کہ نیب کسی کے ساتھ انتقامی کارروائی پر یقین نہیں رکھتا، چ نیب میں تمام افرادسےقانون کےمطابق عزت واحترام سے پیش آیا جائے۔

چیئرمین نیب کو حکام نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ نیب نے گزشتہ12 ماہ میں 503 افرادکوگرفتار  اور 44315کےخلاف شکایات لیں، 1713 شکایات کی جانچ، 877 افراد کے خلاف انکوائریاں کی گئیں، نیب نے ایک سال میں 227افراد کے خلاف انویسٹی گیشنز شروع کیں۔

،بریفنگ میں کہا گیا 440بدعنوانی کےریفرنس مختلف احتساب عدالتوں میں دائر کئےگئے، 2580 ملین روپے بدعنوان عناصر سے برآمد کیے، جو ایک ریکارڈ ہے۔

چیئرمین نیب کا مزید کہنا تھا کہ نیب پراعتماد سازی میں اضافہ ہوا، شفافیت کوفروغ دینے میں مددملی ہے، عالمی فورم کےعالمی مسابقتی اشاریوں میں پاکستان کی درجہ بندی میں بہتری آئی ، پاکستان نئی درجہ بندی میں140 ممالک میں سے107 ویں نمبرپرآ گیاہے، گیلپ اینڈ گیلانی کی حالیہ سروےمیں بھی 59 فیصد لوگوں نے نیب پر اعتماد کا اظہار کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں