نیب نواز تنازع: قائمہ کمیٹی برائے قانون وانصاف نے چیئرمین نیب کو طلب کرلیا
The news is by your side.

Advertisement

نیب نواز تنازع: قائمہ کمیٹی برائے قانون وانصاف نے جسٹس (ر) جاوید اقبال کو طلب کرلیا

 اسلام آباد: نیب کی جانب سے میاں نواز شریف پر بھارت پیسے منتقل کرنے کے اعلامیے نے ڈرامائی شکل اختیار کر لی، قائمہ کمیٹی برائے قانون وانصاف نے چیئرمین نیب کو کل طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاویداقبال کے نوازشریف سے متعلق اعلامیے پرطلب کیا گیا ہے، قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف کااجلاس چوہدری اشرف کی زیرصدارت ہوگا، اجلاس کل ڈھائی بجے ہوگا۔

یاد رہے چند روز قبل قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال نے سابق وزیر اعظم نوازشریف اور دیگر کے خلاف 4.9 بلین ڈالر بھارت بھجوانے کی میڈیا رپورٹس کا نوٹس لیتے ہوئے جانچ پڑتال کا حکم دیا تھا۔

اس پریس ریلیز کا حکومت کی جانب سے شدید ردعمل آیا، وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے قومی اسمبلی میں نیب چیئرمین کو طلب کرنے اور خصوصی کمیٹی بنا کر تحقیقات کروانے کا مطالبہ کیا، میاں نواز شریف کی جانب سے چیئرمین نیب سے 24 میں معافی مانگنے، بہ صورت دیگر مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا گیا۔

بعد ازاں مسلم لیگ ن جاپان کے عہدے داروں کی جانب سے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی، جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ پریس ریلیز نواز شریف کوبدنام کرنے کے لیے جاری کی گئی، چیئرمین نیب سے غیر مشروط معافی مانگنے کا حکم دیا جائے۔

نیب نے موقف اختیار کیا تھا کہ میڈیا رپورٹس کی بنیاد پر تحقیقات کا آغاز کیا گیا ہے، ورلڈ بینک مائیگریشن اینڈ رمیٹنس بک 2016 میں ذکر موجود ہے کہ نواز شریف نے بڑی رقم بھارت بجھوائی، رقم بھجوانے سے بھارت کے غیر ملکی ذخائر میں اضافہ ہوا۔چیئرمین نے  بھی دو ٹوک موقف اختیار کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر احتساب جرم ہے، تو یہ جرم تو ہوتے رہے گا۔


مزید پڑھیں: نواز شریف کے خلاف 4.9 بلین ڈالر بھارت بھجوانے کی شکایت


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں