The news is by your side.

Advertisement

کرپٹ عناصر سے 7 ارب 30 کروڑ وصول کیے گئے، چیئرمین نیب

لاہور: چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا کہ کرپٹ عناصر سے 7 ارب 30 کروڑ روپے وصول کیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب کی زیر صدارت نیب کارکردگی کا جائزہ اجلاس ہوا، جس میں ڈپٹی چیئرمین نیب، پراسیکیوٹر جنرل ودیگر افسران شریک ہوئے۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب احتساب سب کے لیے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے، نیب کو 54 ہزار 334 کرپشن سے متعلق شکایات ملیں، نیب نے 630 کرپشن سے متعلق ریفرنس دائر کیے۔

جاوید اقبال نے کہا کہ نیب نے عدالتوں میں 1270 کرپشن کیسز فائل کیے ہیں، کرپٹ عناصر سے 7 ارب 30 کروڑ روپے وصول کیے گئے، کرپٹ عناصر سے لوٹی رقم قومی خزانے میں جمع کرائیں گے۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ میگااسکینڈل کو منطقی انجام تک پہنچایا نیب کا فریضہ اول ہے۔

مزید پڑھیں: چیئرمین نیب نے رانا ثنا اللہ کے خلاف اثاثہ جات کی تحقیقات کی منظوری دے دی

واضح رہے کہ گزشتہ روز چیئرمین نیب نے مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثنا اللہ کے خلاف اثاثہ جات کی تحقیقات کی منظوری دی تھی۔

یاد رہے کہ اس سے قبل چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ ہماری کسی سے دوستی یا دشمنی نہیں، قانون کے مطابق کام کرنا ہے۔ کیا آپ سے یہ بھی نہ پوچھیں کہ 100 ارب کا قرضہ لیا وہ کہاں گیا؟

انہوں نے کہا تھا کہ نیب کا تعلق کسی سیاسی جماعت، گروہ یا گروپ سے نہیں۔ نیب کا تعلق صرف پاکستان اور عوام کے ساتھ ہے۔ حکومتیں آتی جاتی رہتی ہیں، پاکستان سلامت رہے گا۔

چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ برسر اقتدار لوگوں پر نیب آنکھیں بند رکھے، ایسا نہیں ہوگا۔ تردید کرتا ہوں کہ نیب کا جھکاؤ ایک طرف ہے۔ ہواؤں کا رخ بدل رہا ہے، پہلے ماضی کے مقدمات پر توجہ دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں