The news is by your side.

Advertisement

میگا کرپشن کے وائٹ کالر کرائمز کیسز منطقی انجام کو پہنچانا ترجیح ہے، چیئرمین نیب

اسلام آباد : چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کا کہنا ہے کہ نیب اقوام متحدہ کے بدعنوانی کیخلاف کنونشن کے تحت فوکل ادارہ ہے، میگا کرپشن کے وائٹ کالر کرائمز کیسز منطقی انجام کو پہنچانا ترجیح ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ میگا کرپشن کے وائٹ کالر کرائمز کیسز منطقی انجام کو پہنچانا ترجیح ہے، نیب کے مقدمات میں مجموعی سزاکی شرح اڑسٹھ اعشاریہ آٹھ فیصد ہے ، نیب کی کارکرگی مزید بہتر بنانے کے لئے شعبوں کوفعال بنایا گیا ہے۔

چئیرمین نیب کا کہنا تھا کہ نیب اقوام متحدہ کےبدعنوانی کیخلاف کنونشن کےتحت فوکل ادارہ ہے، عالمی اقتصادی فورم، ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل نے نیب کی تعریف کی ہے۔

جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا نیب کو 2019 میں53643 شکایات موصول ہوئیں جن میں سے 42760 کو نمٹا دیا گیا جبکہ 2018 میں 48591 شکایات آئیں جن میں سے 41414 کو نمٹایا، شکایات میں اضافے سے نیب پرعوام کے اعتماد کا اظہارہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نیب نے2019 کے دوران 1308 شکایات کی جانچ پڑتال کی جبکہ 2019 میں 1686 انکوائریز اور 609 انویسٹی گیشنز کو نمٹایا گیا، 2سال میں بدعنوان عناصر سے 363 ارب روپےب رآمد کیے۔

چئیرمین نیب نے مزید کہا کہ نیب میں سینئرسپروائزری افسران کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کانظام وضع ہے، نیب راولپنڈی میں فرانزک سائنس لیبارٹری قائم کی گئی، جس میں ڈیجیٹل فرانزک،سوالیہ دستاویز، فنگرپرنٹس تجزیے کی سہولت ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں