The news is by your side.

کےالیکٹرک بجلی کی پیداوار بہتر بنانے میں ناکام رہا، چیئرمین نیپرا

کراچی : چیئرمین نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) توصیف حسن فاروقی نے کہا ہے کہ کےالیکٹرک کا سب سے بڑا المیہ یہ ہے کہ وہ اپنی بجلی کی پیداوار کو بہتر نہیں بناسکا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (کے سی سی آئی) کے دورے کے موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر چیئرمین بزنس مین گروپ زبیر موتی والا، وائس چیئرمین بی ایم جی جاوید بلوانی، صدر کے سی سی آئی محمد طارق یوسف، توصیف احمد، محمد حارث اگر، محمد ادریس اور دیگر اراکین بھی موجود تھے۔

چیئرمین نیپرا نے کہا کہ ٹیکنالوجی اور مقابلہ ہی آگے بڑھنے کا واحد راستہ ہے، ٹیکنالوجی پہلے سے موجود ہے لیکن مقابلہ کہیں نظر نہیں آرہا چونکہ کےالیکٹرک کی اجارا داری جولائی 2023 تک ختم ہو جائے گی اور سی ٹی بی سی ایم کراچی کے تاجروں کو اجازت دے گا کہ وہ اپنی بجلی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے یا تو اپنے پاور پلانٹس لگا کر یا اپنی مرضی سے کسی اور پاور پروڈیوسر سے حاصل کرسکیں۔

انہوں نے بتایا کہ کمپیٹیٹیو ٹریڈنگ بائلٹرل کنٹریکٹ مارکیٹ (سی ٹی بی سی) پاکستان کی ہول سیل الیکٹرسٹی مارکیٹ کھولنے کے لیے ایک روڈ میپ فراہم کرتا ہے جس کا مقصد بجلی کے بلک صارفین کو ڈسکوز یا اپنی پسند کے مسابقتی سپلائر سے بجلی خریدنے کا انتخاب فراہم کرنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پچھلے ساڑھے تین سال کے دوران یہ ان کی اولین ترجیحات میں سے ایک رہی ہے کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ کوئی درآمدی ایندھن پر مبنی پراجیکٹ یا پھر ٹیک یا پے پر مبنی پراجیکٹ کو لگانے کی اجازت نہ دی جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اس وقت توانائی کی بدترین صورتحال سے گزررہا ہے کیونکہ پیداواری صلاحیت ہونے کے باوجود ملک بجلی پیدا کرنے سے قاصر ہے کیونکہ بجلی کی پیداوار کے لیے درآمدی ایندھن خریدنے کے لیے فنڈز دستیاب نہیں ہیں۔

چیئرمین نیپرا نے کے الیکٹرک کی جانب سے بندصنعتوں سے وصول کیے جانے والے فکسڈ چارجز کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ متعلقہ قوانین کے تحت ایسی تمام بند صنعتوں کے پاس کنکشن منقطع کرنے کے لیے درخواست دینے کا اختیار ہے جس سے وہ فکسڈ چارجز سے بچ جائیں گے۔

کے الیکٹرک ان صنعتوں کی جانب سے درخواست موصول ہونے پر کسی بھی وقت سیکیورٹی ڈپازٹ اور سسٹم ڈیولپمنٹ چارجز کے بغیر انہیں دوبارہ کنیکشن بحال کرنے کا ذمہ دار ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں