The news is by your side.

Advertisement

کون ہوگا “سینیٹ کا سلطان” ؟ مکمل تفصیلات

اسلام آباد : چیئرمین سینیٹ کیلئے اگر مگر کی جنگ جاری ہے، انتخاب کیلیے چھوٹی جماعتوں کے ووٹ کو بڑی اہمیت حاصل ہے، حکومت اور اپوزیشن کے درمیان رسہ کشی عروج پر پہنچ گئی، دونوں نے اپنے اپنے امیدواروں کا اعلان کردیا۔

چیئرمین سینیٹ کون بنے گا ؟ صادق سنجرانی یا یوسف رضا گیلانی ؟ اس کا فیصلہ آج بعد نماز جمعہ خفیہ رائے شماری کے ذریعے ہوگا۔

مختلف جماعتوں کے سینیٹرز کی تعداد کے حساب سے حکمران جماعت تحریک انصاف سینیٹ کی ستائیس نشستوں کے ساتھ سر فہرست ہے۔

اتحادی جماعتوں کے شامل سینیٹرز میں بلوچستان عوامی پارٹی کے12 ایم کیو ایم3 مسلم لیگ ق اور فنکشنل کے ایک ایک سینیٹرز سمیت4آزاد سینیٹرز کی حمایت بھی حاصل ہے، اس طرح حکومتی اتحاد کے مجموعی سینیٹرز کی تعداد اڑتالیس بنتی ہے۔

دوسری جانب اپوزیشن اتحاد کے سینیٹرز کی تعداد مفرور اسحاق ڈار سمیت ویسے تو باون ہے لیکن خفیہ رائے شماری میں اکاون ہی موجود ہوں گے۔

اپوزیشن کی اتحادی جماعتوں میں پیپلزپارٹی کے21، ن لیگ کے18، جے یو آئی کے5 جبکہ عوامی نیشنل پارٹی، نیشنل پارٹی، پختونخوامیپ کے دو، دو سینیٹرز شامل ہیں، بلوچستان نیشنل پارٹی کا ووٹ بھی اپوزیشن کیلئے کافی اہمیت کا حامل ہے۔

تجزیہ نگاروں کے مطابق ایوان بالا میں جیت کے لیے اکیاون ووٹ درکارہوں گے، چئیرمین سینیٹ کی دوڑ میں بظاہر اپوزیشن کا پلہ بھاری نظر آتا ہے لیکن ایسے میں جماعت اسلامی کا ایک ووٹ بھی بڑی اہمیت رکھتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں