The news is by your side.

Advertisement

چاند پر تحقیق، چین اہم سنگ میل عبور کر کے دنیا کا تیسرا ملک بن گیا

بیجنگ: چین کا چینج ای فائیو مشن چاند کی سطح سے نمونے لے کرزمین پر واپس پہنچ گیا۔

چین کی قومی خلائی ایجنسی نیشنل اسپیس اینڈ ایڈمسٹریشن کی جانب سے جمعرات کے روز جاری ہونے والے اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ خلائی مشن چٹانوں اور چاند سے مٹی کے نمونے لے کر بیجنگ میں کامیابی سے اتر گیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ چین کے اس مشن نے ایک ماہ سے بھی کم وقت میں اپنا کام مکمل کیا اور کامیابی سے واپس پہنچا۔ چینج ای فائیو کی جانب سے لائے گئے نمونوں پر ماہرین تحقیق کریں گے۔

زمین پر خلائی مشن کی کامیابی لینڈنگ کے بعد چین دنیا کا وہ تیسرا ملک بن گیا جس نے چاند پر خلائی گاڑی بھیج کر نمونے اکٹھے کیے اور انہیں لے کر زمین پر واپس آیا۔

رپورٹ کے مطابق چینج فائیو نے دو طریقوں کی مدد سے نمونے اکھٹے کیے جن میں سے پہلا آسان اور سادہ تھا جبکہ دوسرے میں روبوٹ نے اپنے بازؤں کی مدد وہاں پر ڈرلنگ کی اور پھر نمونے حاصل کیے۔ رپورٹ کے مطابق خلائی گاڑی نے چاند کی دو کلومیٹر گہرائی سے نمونے حاصل کیے اور ڈیٹا مانیٹرنگ میں بیٹھے ماہرین کو بھیجا۔

مزید پڑھیں: چین نے چاند پر اپنا پرچم لہرا دیا (تصاویر جاری)

یہ بھی پڑھیں: چاند پر تحقیق، چین نے ایک اور اہم کامیابی حاصل کرلی

چین کی قومی خلائی ایجنسی سی این ایس اے کی جانب سے جاری کردہ بیان میں بتایا گیا تھا کہ چینج ای 5 چوبیس نومبر کو خلا میں بھیجا گیا جس نے 112 گھنٹے کا سفر طے کیا اور پھر وہ چاند کے مدار میں داخل ہوا۔

چینی ایجنسی کی جانب سے بتایا گیا تھا کہ مشن چاند کی سطح سے تقریباً چار سو کلومیٹر بلندی سے مدار میں داخل ہوا اور کامیابی سے اتر کراپنا کام مکمل کیا۔

سی این ایس اے کے حکام نے بتایا تھا کہ چینج 5 گاڑی بغیر کسی مسئلے کے مدار میں داخل ہوئی اور پھر رفتار کو کامیابی کے ساتھ آہستہ کر کے اپنا زاویہ بھی درست کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں