The news is by your side.

Advertisement

دہشتگردی قوانین کو سیاستدانوں کے خلاف استعمال کیا جارہا ہے، شیری رحمان

اسلام آباد: پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے ڈاکٹرعاصم کی گرفتاری کو انتقامی کارروائی قراردے دیا،شیری رحمان کا کہنا ہے ہمیں نیشنل ایکشن پلان پر وضاحتیں درکار ہیں۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیری رحمان نے کہا کہ کرپشن کے خلاف کارروائی کرنا ہے تو پورے ملک میں کی جائے، پیپلزپارٹی کرپشن کا دفاع نہیں کرے گی ہم نے ہمیشہ عدالتوں کا احترام کیا ہے اور سابق وزیراعظم گیلانی اب بھی عدالت میں پیش ہونے کو تیار ہیں۔

شیری رحمان کا کہنا تھا کہ یہ کیسے کہا جاسکتا ہےکہ پیپلزپارٹی دہشت گردوں کی معاون ہے، ہم اپنے اداروں اور قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں، ہمارے کارکنان اور قائدین نے گولیاں کھائیں، ہم نے کسی سے کوئی سمجھوتے نہیں کیے اور نہ ہی ہمارے کسی سے رابطے تھے کیا پھر ہمیں کس بات کا صلہ مل رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب کو صرف پیپلزپارٹی ہی نظر آرہی ہے، اس طرح کی کارروائیاں کرکے ہمیں کیا پیغام دینے کی کوشش ہورہی ہے، دہشت گردی کے خلاف کام ہمارے دور حکومت میں شروع ہوا، ہمارے دل اور نظریئے میں کبھی یہ ابہام نہیں رہا کہ پاکستان کا جھنڈا جلانے والوں اور دہشت گردوں سے مذاکرات کیے جائیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے رہنماؤں کے غیر ضمانتی وارنٹ جاری کیے جارہے ہیں لیکن پیپلزپارٹی درپیش چیلنجز کا سامنا کرنا کے لیے تیار ہے، پیپلزپارٹی میدان میں ہے اور آگے بڑھتی جارئے گی۔

اس موقع پر قمرزمان کائرہ کا کہنا ہے دہشتگردی کے الزام پیپلز پارٹی کسی صورت برداشت نہیں کرے گی، قمر زمان کائرہ نے کہا ہم پہلے گھبرائے نہ اب گھبرائے ہیں، حکومت سے بات کرنے کیلئے تیار ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں