The news is by your side.

Advertisement

چونیاں‌ کیس، بچوں کا بدفعلی کے بعد قتل، ملزم 7 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

لاہور: انسداد دہشت گردی کی عدالت نے چونیاں میں چار بچوں کو بدفعلی کے بعد قتل کرنے والے مبینہ شخص کو 7 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں جج عبدالقیوم خان نے چونیاں کیس کی سماعت کی، پولیس نے ملزم سہیل شہزاد کو سخت سیکیورٹی میں عدالت میں پیش کیا۔

تفتیشی افسر نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ملزم پر 9 سالہ حسنین، 8 سالہ سلمان اکرم اور بارہ سالہ محمد عمران کو اغوا کے بعد بدفعلی اور قتل کرنے کا الزام ہے۔

پولیس افسر نے بتایا کہ ملزم کا ڈی این اے ایک مقتول بچے فیضان سے میچ کرگیا، سہیل نے فیضان کو اغوا کے بعد زیادتی کا نشانہ بنا کر قتل کردیا تھا۔ تفتیشی افسر نے عدالت سے استدعا کی کہ تین دیگر مقدمات میں ملزم کو مزید تفتیش کے لیے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں: سانحہ چونیاں، گرفتار ملزم 15 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

عدالت نے تفتیشی افسر کی استدعا منطور کرتے ہوئے ملزم کو 7 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا، کیس کی آئندہ سماعت 17 اکتوبر کو ہوگی۔

واضح رہے رواں ماہ ستمبر میں قصور کے ضلع پتوکی کے علاقے چونیاں میں ویران جگہ سے لاپتا بچوں‌ کی مسخ شدہ لاشیں برآمد ہوئیں تھی، جن میں سے ایک لاش مکمل جبکہ دو کے اعضا اور ہڈیاں تھیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے غفلت برتنے پر ڈی ایس پی اور ایس ایچ او کو معطل اور ڈی پی او قصور کو بھی عہدے سے ہٹا دیا تھا۔

بعد ازاں 26 ستمبر کی رات تفتیشی ٹیم نے جیو فرانزک کی مدد سےپنجاب کے علاقے رحیم یار خان میں کارروائی کرتے ہوئے ایک شخص کو گرفتار کیا تھا، جس کی شناخت شہزاد کے نام سے ہوئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں