The news is by your side.

Advertisement

قصور ویڈیو اسکینڈل کے 6ملزمان کی عبوری ضمانت منسوخ

قصور: گھناؤنے فعل کے مرتکب چھ ملزمان کی عبوری ضمانت منسوخ کردی گئی، ملزمان کو عدالت سے گرفتار کرلیا گیا، ملزم تنزیل الرحمان لاہور ہائیکورٹ کا ملازم نکلا، جسکو چیف جسٹس نے معطل کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق قصور وڈیو اسکینڈل کے ملزمان کو عبوری ضمانت کے لئے عدالت میں پیش کیا گیا،چھ ملزمان کو ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سمینہ حیات کی عدالت میں پیش کیا گیا، تاہم عدالت نے کارروائی پہلے گیارہ بجے اور پھر مزید چند گھنٹوں کے لئے موخر کردی۔

ملزمان میں سلیم اختر، تنزیل الرحمان،محمد یحیی، عتیق الرحمان اورعلیم آصف شامل ہیں۔

اس موقع پر وکیل استغاثہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مقدمے کی پیروی چھوڑنے کیلئے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔

وکیل کا مزید کہنا تھا کہ ’’پولیس نے علاقے میں غیر قانونی کرفیو نافذ کیا ہوا ہے اور مظاہرین کا میڈیکل نہیں ہونے دیا جارہا‘‘۔

وکیل نے یہ بھی کہا کہ ’’پولیس نے مظاہرین کو ان کے گھروں سے اٹھالیا ہے‘‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’’اس سے قبل بھی 5 پیشیاں ہوچکی ہیں اور ایس پی انوسٹی گیشن ندیم عباس آج بھی آگے کی تاریخ لینا چاہتے ہیں‘‘۔

دوسری جانب وکیل صفائی نے الزامات مسترد کرتے ہوئے کہا ویڈیوکو بطور شہادت لیا جاسکتا،  وکیل استغاثہ نے الزام عائد کیا کہ پولیس کے لاٹھی چارج سے پچاس کے قریب افراد زخمی ہوئے جبکہ میڈیا کو کوریج سے روکنے کیلئے مختلف حربے استعمال کئے جارہے ہیں۔

مقامی عدالت نے معاملے کی سنگینی کو مدنظر رکھتے ہوئے ملزمان کی ضمانت 11 بجے تک ملتوی کردی گئی ہے اور مممکن ہے کہ ان کی ضمانت منسوخ کرتے ہوئے گرفتاری کے احکامات جاری کردئیے جائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں