ٹھنڈا پانی پینا صحت کے لیے نقصان دہ chill water disease for health
The news is by your side.

Advertisement

ٹھنڈا پانی پینا صحت کے لیے نقصان دہ

کراچی: ٹھنڈا پانی پینے والے افراد موسم کی تمیز کے بغیر اسے 12 مہینے استعمال کرتے ہیں تاہم وہ نہیں جانتے کہ جو ’ٹھنڈا پانی‘ وہ پی رہے ہیں وہ صحت کے لیے کس قدر نقصان دہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق بہت سارے افراد گرمی سے بچنے کے لیے برف کا یخ ٹھنڈا پانی پینا پسند کرتے ہیں تاہم بعض افراد کو یہ عادت اس قدر بری طرح متاثر کرتی ہے کہ وہ سردیوں میں بھی ٹھنڈا پانی استعمال کرنا بند نہیں کرتے۔

ہیلتھ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ٹھنڈا پانی پینے کے نقصانات جوانی میں تو نظر نہیں آتے البتہ بڑھتی عمر کے ساتھ اس کے اثرات ضرور نمودار ہوتے ہیں جن سے محفوظ رہنا بہت مشکل ہوتا ہے۔

ٹھنڈا پانی پینے سے فی الوقت پیاس تو بجھ جاتی ہے مگر اس کے صحت پر بہت برے اثرات پڑھتے ہیں۔

گلے کی بیماری

ٹھنڈا پانی استعمال کرنے والے افراد کی آواز وقت سے پہلے تبدیل ہوجاتی ہے  اور ان کو گلے کے درد کی شکایت بھی رہتی ہے۔

تیزابیت

ٹھنڈا پانی استعمال کرنے سے معدے میں تیزابیت پیدا ہوتی ہے جس کے باعت استعمال کرنے والا شخص دیگر بیماریوں میں بھی متبلا ہوجاتا ہے۔

قبض

ٹھنڈے پانی کا آنتوں سے گزرنے کا عمل نہایت کٹھن اور دشوار ہوتا ہے جس کے باعث اندر کی آنتیں سوکھ جاتی ہیں اور قبض کی شکایت پیدا ہوتی ہے اس کے برعکس گرم پانی آنتوں کو تر رکھتا ہے۔

نظام ہاضمہ کی خرابی

ٹھنڈا پانی نظام ہاضمہ کی خرابی کا سب سے بڑا سبب ہے، اس کے استعمال سے معدے کے مسائل بڑھ جاتے ہیں جو نظام ہاضمہ کو بری طریقے سے متاثر کرتے ہیں۔

وزن میں اضافہ

ٹھنڈا پانی پینے سے جسم کا درجہ حرارت کم ہوتا ہے جس کے باعث کیلوریز ختم نہیں ہوتیں اور پھر انسان کا وزن بڑھ جاتا ہے۔

جوڑوں کا درد

انسان کی ہڈیوں کے لیے ٹھنڈک بہت نقصان دہ ہے، ٹھنڈا پانی انسانی درجہ حرارت کو کم کردیتا ہے جس کی وجہ سے ہڈیوں کو ٹھنڈک ملتی ہے اور پھر جوڑوں کے درد کی شکایت پیدا ہوتی ہے۔

نوٹ: ٹھنڈا پانی پینے کے باعث پیدا ہونے والی مذکورہ بیماریوں کی نشاندہی تحقیق میں ہوئی، متعلقہ بیماریوں میں مبتلا افراد اپنے طبیب سے ضرور مشورہ کریں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں