The news is by your side.

Advertisement

چین کا خاندانی تعلیم کے لیے بڑا قدم

بیجنگ: چین میں خاندانی تعلیم کے فروغ کے لیے نیا قانون منظور کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق چینی قانون سازوں نے ہفتے کو نیشنل پیپلز کانگریس کی قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں خاندانی تعلیم کے فروغ سے متعلق ایک نئے قانون کی منظوری دے دی ہے۔

اس قانون میں کہا گیا ہے کہ بچوں کے والدین یا ان کے دیگر سرپرست، خاندانی تعلیم کے لیے ذ مہ دار ہوں گے، جب کہ قانون کے مطابق ریاست، اسکول اور معاشرہ خاندانی تعلیم کے لیے رہنمائی، مدد اور خدمات فراہم کریں گے۔

چین میں چھوٹے بچوں کے تعلیمی کام کے بوجھ کو کم کرنے کے لیے ایک مہم شروع کی گئی ہے، اب اس قانون کا تقاضا ہے کہ مقامی حکومتیں کاؤنٹی کی سطح پر یا اس سے بھی اوپر کی سطح پر لازمی تعلیم میں ضرورت سے زیادہ ہوم ورک اور کیمپس سے باہر کے ٹیوشن کے بوجھ کو کم کرنے کے لیے اقدامات کریں۔

اس قانون نے والدین پر پابندی عائد کر دی ہے کہ وہ اپنے بچوں پر زیادہ تعلیمی بوجھ نہیں ڈالیں گے، اس میں کہا گیا ہے کہ بچوں کے سرپرست بچوں کے مطالعے، آرام، تفریح اور جسمانی ورزش کے لیے اوقات کار کو درست طور پر منظم کریں۔

والدین پر یہ بھی لازم کیا گیا ہے کہ وہ اپنے بچوں کو انٹرنیٹ کے عادی بننے سے روکنے میں اپنا کردار ادا کریں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں