The news is by your side.

Advertisement

چین نے کرپٹو کرنسی کی مارکیٹ کو ہلا کر رکھ دیا

بیجنگ: چین کے ریگولیٹرز نے کرپٹو کرنسی کی تجارت اور اس کی کان کنی پر پابندی لگا دی ہے، جس سے بٹ کوائن کو ایک بڑا جھٹکا لگ گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چین نے تمام کرپٹو کرنسی لین دین کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے، یہ اقدام چینی حکومت کی جانب سے سخت کریک ڈاؤن کے دوران آیا ہے۔

پیپلز بینک آف چائنا نے جمعہ کو کہا کہ یہ اقدام قومی سلامتی اور استحکام کو یقینی بنانے کے لیے کیا گیا ہے، تاہم چین کئی مہینوں سے ڈیجیٹل ٹوکنز کے ساتھ اپنے مقابلے میں کمی لانے کے لیے قواعد و ضوابط میں تبدیلیاں لا رہا ہے۔

بیجنگ نے کہا کہ کرپٹو کرنسیوں کے لیے تجارت کی پیش کش کرنے والی آن لائن سروسز پر اب سختی سے پابندی عائد ہے، اور بیرون ملک کرپٹو کرنسی ایکسچینج کو بھی غیر قانونی قرار دیا گیا ہے، نیز ملک بھر میں کرپٹو کرنسی کی کان کنی کو بھی روکا جا رہا ہے۔

چینی حکومت کے اس بڑے قدم نے مارکیٹوں میں ابتدائی خوف و ہراس پیدا کر دیا ہے، اور ہر بڑا ڈیجیٹل اثاثہ یکایک سر کے بل نیچے گرنے لگا ہے۔

بروکریج ایوا ٹریڈ کے چیف مارکیٹ تجزیہ کار نعیم اسلم نے وال اسٹریٹ جرنل کو بتایا کہ آج کا پیغام بہت مضبوط تھا، وہ واقعی کہہ رہے ہیں کہ کوئی بھی اب کرپٹو کرنسی سے کوئی تعلق نہیں جوڑ سکتا۔

اس خبر کے سامنے آنے کے بعد بٹ کوائن 6 فی صد سے زیادہ گر گیا ہے، یہ گراؤ تقریباً 41 ہزار ڈالر تک ہے۔ کرپٹو کرنسیوں کو خلاف قانون قرار دینے کا اعلان پیپلز بینک آف چین کی ویب سائٹ پر جاری کیا گیا۔

اس اعلان کے مطابق ڈیجیٹل کرنسیز کی تجارتی سرگرمیوں میں شریک ہونا مجرمانہ سرگرمی تصور کی جائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں