چین نے امریکا کے نئے ٹیکسز کے باعث گھٹنے ٹیکے ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ
The news is by your side.

Advertisement

چین نے نئے ٹیکسز کے باعث امریکا کے سامنے گھٹنے ٹیکے ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی معاشی پالیسیوں پر تنقید کرنے والوں کو نشانہ بناتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ’چین پر محصولات عائد کرنے سے بیجنگ مذاکرات کرنے کے لیے امریکا کے سامنے سرنگوں ہوا ہے‘۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر محصولات کے حوالے سے بنائی جانے والی پالیسی پر تنقید کرنے والوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ بیجنگ پر ٹیکس عائد کرنے سے چین امریکا کے ساتھ مذاکرات کرنے کے لیے تیار ہوا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ٹرمپ نے ٹویٹر پر دعویٰ کیا تھا کہ چینی اشیاء پر ٹیکس عائد کرنے کے بعد کسی کو یقین نہیں تھا کہ چین مذاکرات کے لیے امریکا کے سامنے سرنگوں ہوجائے گا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ مجھے علم تھا چینی اشیاء پر محصولات عائد کرنے سے نتائج اچھے ہی آئیں گے، لیکن چند بے وقوف لوگ مجھ پر تنقید کررہے تھے اور میری معاشی پالیسیوں کا مذاق اڑا رہے تھے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ٹیکسز کے حوالے سے امریکی پالیسی میں تبدیلی سے بہتر نتائج سامنے آئیں گے، جس کے باعث امریکی معیشت میں اضافہ ہوگا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی پالیسیوں سے مقامی تاجروں میں امید کی نئی کرن پیدا ہوئی ہے، کیوں کہ چین کی مارکیٹ میں 27 فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹویٹر پر کیے گئے ٹویٹ میں ’امریکا فرسٹ‘ کا نعرہ بھی تحریر کیا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکا درآمد کی جانے والی چینی مصنوعات پر 34 ارب ڈالرز کے محصولات عائد کرچکے ہیں، جبکہ مستقبل میں امریکا کی جانب سے چین پر مزید 16 ارب ڈالر کے ٹیکس عائد کیے جائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں