The news is by your side.

Advertisement

تائیوان کا امریکا سے اسلحے کی خریداری کا معاہدہ، چین کی پابندی عاید کرنے کی دھمکی

بیجنگ: امریکا اور تائیوان کے درمیان طے پائے گئے اسلحے کی خریداری کے معاہدے سے متعلق چین نے امریکی حکام کو خبردار کرتے ہوئے پابندی عاید کرنے کی دھمکی دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق دونوں ممالک کے درمیان طے پائے معاہدے کے تحت امریکا 2.2 بلین ڈالر مالیت کا اسلحہ تائیوان کو فروخت کرے گا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق چین نے امریکا کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ معاہدے پر اگر عمل ہوا تو چین اس معاہدے میں شامل اسلحے سے متعلق اداروں پر پابندی عاید کردے گا۔

تائيوان کے معاملے پر چين کے اعلٰی ترين سفارت کار وانگ يی نے امريکا کو تنبیہ کی ہے کہ وہ آگ سے نہ کھيلے، کوئی بھی بيرونی قوت چين کے اتحاد کو نہيں روک سکتی۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکا یہ معاہدے کرکے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کررہا ہے، اپنے خطے کی حفاظت اور قومی سالمیت کے لیے ہر اقدامات کریں گے۔

وانگ یی کا مزید کہنا تھا کہ تائیوان چین کا حصہ ہے، مذکورہ معاہدہ ہمارے اندرونی معاملات میں مداخلت کے مترادف ہے۔

خیال رہے کہ چین نے یہ دھمکی امريکی محکمہ خارجہ کے اس اقدام کے رد عمل ميں دی جس کے تحت محکمے نے تائيوان کو دو اعشاريہ دو بلين ڈالر کے اسلحے کی فروخت کی منظوری دے دی ہے۔

واضح رہے کہ چين تائيوان کو اپنا حصہ مانتا ہے حالاں کہ تائيوان ميں اپنی جمہوری حکومت قائم ہے، جبکہ چین کا موقف ہے کہ وہ ایک دن تائیوان کو اپنے خطے میں ضم کرلے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں