The news is by your side.

پاکستان میں کوئی بھی سیاسی جماعت اور حکومت ہو چین کی پالیسی برابر ہے،چینی قونصل جنرل

اسلام آباد : چینی قونصل جنرل لاہورژاؤ شیرین کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کوئی بھی سیاسی جماعت اور حکومت ہو چین کی پالیسی برابر ہے۔

تفصیلات کے مطابق چینی قونصل جنرل لاہورژاؤ شیرین نے اےآر وائی نیوز کو خصوصی انٹرویو میں کہا کہ پاکستان میں کوئی بھی سیاسی جماعت ،حکومت ہو چین کی پالیسی برابرہے۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندے نے سوال کیا کہ عمران خان حملےمیں زخمی ہوکر لاہورہی میں ہیں آپ ان کو ملنےجائیں گے؟ جس پر چینی قونصل جنرل نے کہا کہ مجھے ابھی تک موقع نہیں ملا کہ ذاتی حیثیت میں عمران خان کو مل سکوں، میں جانتا ہوں عمران خان ریکور کر رہے ہیں اور ابھی کچھ وقت لگے گا۔

ژاو شیرین کا کہنا تھا کہ زمان پارک میرے قونصلیٹ سے زیادہ دور نہیں ہے، عمران خان کے لیے نیک خواہشات ہیں،دعا ہےکہ وہ جلد صحت یاب ہوجائیں، ہم پاکستان ،یہاں کے عوام کو پرامن ،ہم آہنگ دیکھنا چاہتے ہیں۔

نمائندے نے سوال کیا کہ اگر نوازشریف یہاں واپس آتے ہیں تو آپ ان سےملیں گے،؟ چینی قونصل جنرل نے جواب میں کہا کہ اس کا جواب تو لاہور کے عوام کو دینا چاہیے، میں نوازشریف پر لکھی گئی کتاب کو پڑھ رہا ہوں۔

ژاو شیرین نے کیا یہ تاثر درست ہے کہ عمران خان حکومت میں سی پیک پر عملدرآمد رک گیا تھا؟ کے سوال پر کہا کہ عام طور پر میں مقامی سیاسی معاملات پر بات نہیں کرتا ، سمجھتا ہوں مجموعی طور پر سی پیک پر پیش رفت درست رہی۔

انھوں نے مزید کہا کہ کورونا کے باوجود سی پیک کے پنجاب میں 6 منصوبے مکمل ہوئے، کورونا کی وجہ سے کام پر اثر ضرور پڑا لیکن سی پیک پر پیش رفت جاری رہی۔

ژاؤشیرین کا کہنا تھا کہ سی پیک پر چند مخصوص عناصر نے جو مختلف صورتحال بیان کی اس سے اتفاق نہیں کرتا، سی پیک کوآگے بڑھنا ہے، دونوں ممالک میں تعاون اسی طرح جاری رہے گا۔

چینی قونصل جنرل نے کہا کہ لاہور اچھا ہے، یہاں کے لوگ اچھے ہیں، باغوں اور ادب کا شہر ہے، بس ایک چیز ہے کہ لاہور سے اسموگ کےتدارک کے لیے کچھ کرنا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں