چینی صوبے میں مسلمانوں کے داڑھی رکھنے اورپردہ کرنے پرپابندی Muslim beard
The news is by your side.

Advertisement

چینی صوبے میں مسلمانوں کی لمبی داڑھی اورپردہ کرنے پرپابندی

سنکیانگ : چینی حکومت نے صوبہ سنکیانگ میں مسلمانوں کو لمبی داڑھی رکھنے اور خواتین کو عوامی مقامات پر پردہ نہ کرنے اور سرکاری ٹی وی نہ دیکھنے پر سخت کارروائی کا عندیہ دیا ہے، اس کا مقصد اسلامی انتہا پسندی کیخلاف اقدامات کرنا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چین نے اپنے مغربی علاقے سنکیانگ میں نئی پابندیاں متعارف کروائی ہیں جنہیں اسلامی انتہاپسندی کے خلاف مہم کے طور پر بیان کیا گیا ہے۔

چین کی جانب سے کیے گئے اقدامات میں غیرفطری طور پر لمبی داڑھیاں رکھنے، عوامی مقامات پر پردہ کرنے اور سرکاری ٹی وی دیکھنے سے انکار پر پابندی جیسے اقدامات شامل ہیں۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق سنکیانگ اویغور نسل کا آبائی علاقہ ہے جہاں پر زیادہ تر مسلمان آباد ہیں اوران کا کہنا ہے کہ انہیں چین میں امتیازی سلوک کا سامنا ہے۔ چین کی حکومت پرتشدد واقعات کا ذمہ دار مسلمان شدت پسندوں اور علیحدگی پسندوں کو قرار دیتی ہے۔

دوسری جانب انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ یہ شورش جابرانہ پالیسیوں کا ردعمل ہے اور نئے اقدامات اویغور لوگوں کو شدت پسندی کی جانب مزید دھکیل سکتے ہیں، اگرچہ سنکیانگ میں اسی طرح کی پابندیاں پہلے بھی نافذ تھی لیکن اب انہیں قانونی طور پر لاگو کر دیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں