The news is by your side.

Advertisement

کرائسٹ چرچ حملے میں نمازیوں کو بچاتے ہوئے جان قربان کرنے والا پاکستانی ہیرو

لندن : برطانوی میڈیا نے پاکستانی نعیم راشدنے کرائسٹ چرچ حملے میں ہیرو قرار دیتے ہوئے کہا نعیم راشد نے جان پرکھیل کر نمازیوں کو بچانے کی کوشش کی اور زخموں کی تاب نہ لاکردم توڑگئے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے ہیرو نعیم راشد جنہوں نے کرائسٹ چرچ میں لوگوں کو بچانے کے لیے اپنی جان قربان کردی، برطانوی میڈیا
کا کہنا ہے کہ پاکستانی نعیم راشدنے کرائسٹ چرچ حملے میں ہیرو کا کردار ادا کیا اور جان پر کھیل کر نمازیوں کو بچانے کی کوشش کی۔

برطانوی میڈیا کے مطابق نعیم راشداسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاکردم توڑگئے، ان کے بیٹے طلحہ بھی فائرنگ میں جاں بحق ہوگئے تھے،نعیم راشد نے حملہ آور پر قابو پانے کی کوشش کی تھی۔

ان کاتعلق ایبٹ آباد سے تھا، وہ نیوزی لینڈ میں ٹیچنگ کرتے تھے۔

خیال رہے گذشتہ روز دہشت گرد فائرنگ کرتا ہوا النور مسجد میں داخل ہوا تو ڈاکٹر نعیم نے اس کو روکنے کی کوشش کی، جس پر دہشت گرد نے ان پر گولیوں کی بوچھاڑ کردی۔

مزید پڑھیں :  نیوزی لینڈ سانحہ : دوپاکستانیوں کی شہادت کی تصدیق ان کے اہل خانہ نے کردی

ڈاکٹر نعیم کی کزن آمنہ سجاد کا کہنا ہے کرائسٹ چرچ اسپتال نے ڈاکٹر نعیم کی شہادت کی تصدیق کی ہے جبکہ شہید کے ماموں ڈاکٹر سلیم افضل نےکہا نعیم نے شہید ہوکر ہمیں عزت دی۔

سوگوار خاندان نے کہا شہید باپ بیٹے کے جسد خاکی کو وطن واپس لانے یا نہ لانے کا فیصلہ شہید کی بیوہ کریں گی۔

واضح رہے   نیوزی لینڈ کے علاقے کرائسٹ چرچ میں سفید فام شخص نے دو مساجد پر اُس وقت فائرنگ کی تھی کہ جب وہاں نمازِ جمعہ کی ادائیگی کے لیے مسلمانوں کا اجتماع شروع ہونا تھا۔

فائرنگ کے واقعے میں 49 مسلمان شہید جبکہ متعدد نمازی شدید زخمی ہوئے، ملزم نے اپنے گھناؤنے عمل کی ویڈیو سوشل میڈیا پر براہ راست نشر کی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں