The news is by your side.

Advertisement

مسیحی خاتون کا اغواء اور زبردستی شادی، شوہر کی اعلیٰ حکام سے مدد کی اپیل

اسلام آباد : اسلام آباد سے بازیاب ہونے والی مسیحی خاتون کے شوہر نے اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ مجھے اور میری بیوی کو دھمکیاں دی گئیں، اسے زبردستی مسلمان کیا جارہا ہے، وزیر مملکت شہریار آفریدی نے ویڈیو کا نوٹس لے لیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد سے  تین بچوں کی ماں مسیحی خاتون کے اغواء اور بازیابی کے بعد مغویہ کے شوہر نوید اقبال نے ایک ویڈیو پیغام میں اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ میری بیوی کو بحفاظت گھر واپس بھیجا جائے۔

سوشل میڈیا پر جاری ایک ویڈیو میں نوید اقبال کا کہنا ہے کہ25فروری کو خالد ستی نامی شخص نے میری بیوی صائمہ کو اسلحہ کے زور پر اغواء کیا، اس کو زبردستی مسلمان کرکے اس سے شادی کی گئی۔

پولیس نے میری جانب سے خود کو آگ لگانے کی دھمکی کے بعد یکم مارچ کو ایف آئی آر درج کی اور پانچ مارچ کو اسے بازیاب کرایا، اب مجھے دھمکیاں دی جارہی ہیں وزیر اعظم اور چیف جسٹس نوٹس لے کرانصاف فراہم کریں۔

دوسری جانب مسیحی خاتون کے اغواء اور بازیابی سے متعلق اس کا بیان سامنے آیا یے مذکورہ خاتون نے متعلقہ مجسٹریٹ کے سامنے بیان اپنا ریکارڈ کراتے ہوئے کہا ہے کہ میں نے اپنی مرضی سے اسلام قبول کیا ہے اور اپنی مرضی سے ہی میں نے خالد ستی سے شادی کی ہے اور اب میں اپنے شوہر کے ساتھ ہی رہنا چاہتی ہوں۔

علاوہ ازیں اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ آج وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے واقعےکا نوٹس لے لیا، شہریار آفریدی نے آئی جی اسلام آباد سے واقعے کی رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔

پولیس کا مؤقف

اس حوالے سے پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پولیس نے اسلام آباد سے اغواء ہونے والی مسیحی خاتون صائمہ کو5مارچ کو بازیاب کرایا تھا، چھاپے کے دوران پولیس نے صائمہ سے زبردستی شادی کرنے کا ملزم بھی گرفتار کیا تھا۔

جس کے بعد خاتون اور گرفتار ملزم کو طبی معائنے کیلئے پمز اسپتال منتقل کردیا گیا تھا، جہاں ملزم کا میڈیکل کرایا گیا تاہم خاتون نے میڈیکل کرانے سے انکار کردیا تھا، پولیس کے مطابق میڈیکل نہ کرانے سے متعلق انہوں نے سی ایم او کو بیان بھی دیا تھا۔

بعد ازاں خاتون کو متعلقہ مجسٹریٹ کے سامنے بیان ریکارڈ کرانے کیلئے پیش کیا گیا، پولیس حکام کے مطابق مجسٹریٹ نے خاتون کو دارلامان بھیجنے کاحکم دیا تھا اور دو دن کے بعد خاتون کو دوبارہ مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں