site
stats
پاکستان

اسلامی نظریاتی کونسل نے تحفظ نسواں بل کوغیراسلامی قراردےدیا

لاہور: اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین مولانا محمد خان شیرانی نے تحفظ نسواں بل کو اسلامی شریعت کے منافی قراردے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلامی نظریاتی کونسل کے اجلاس میں مولانا شیرانی کا کہنا تھا کہ شریعت میں خواتین کے تمام حقوق قران اورسنت کی روشنی میں محفوظ کیے گئے ہیں لہذا علیحدہ سے قانون کی ضرورت نہیں۔

اس سے قبل گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا تھا کہ وہ تحفظِ خواتین بل کو پڑھے بغیر اس پر کسی بھی قسم کے تبصرے سے گریز کریں گے، تاہم آج انہوں نے اس قانون کو اسلامی قوانین کے منافی قراردیتے ہوئیے کہا کہ اسے قبول نہیں کیا جاسکتا۔

ان کا کہنا تھا کہ اسمبلیوں کو اس قسم کی قانون سازی سے قبل اسلامی نظریاتی کونسل سے مشاورت کرنی چاہیئے۔ کونسل ایک آئینی ادارہ ہے اوراورپارلینمنٹ میں کوئی بل اس کی مشاورت کے بغیرپیش نہیں کرنا چاہئے۔

مولانا شیرانی کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت قانون سازی کے لئے اسلامی نظریاتی کونسل سے مشاورت نہیں کرتی جو کہ آئین کی خلاف ورزی ہے۔

انہوں نے یاد دلایا کہ جنرل ضیا الحق کی حکومت اسلامی نظریاتی کونسل سے ہر معاملے میں مشاورت کیا کرتی تھی اور کونسل کے نظریے کے مطابق فیصلے کیا کرتی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top