The news is by your side.

Advertisement

سول ایوی ایشن اور پی آئی اے میں نیا تنازع

کراچی : سول ایوی ایشن اتھارٹی اور قومی ایئر لائن کے مابین اکاؤنٹ آڈٹ کے معاملے پر تنازع کھڑا ہوگیا۔

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن (پی آئی اے) کی جانب سے سول ایوی ایشن اتھارٹی کو اکاؤنٹ آڈٹ میں مدد کی پیش کی گئی تھی جس پر دونوں قومی اداروں میں تنازع پیدا ہوگیا۔

ترجمان سی اے اے کا کہنا ہےکہ پی آئی اے کے چیف ایگزیکٹو کی اکاؤنٹ آڈٹ میں مدد کی پیشکش ان کے مینڈیٹ سے باہر اور غیر پیشہ ورانہ ہے۔

ترجمان سول ایوی ایشن نے اس حوالے سے کہا کہ بین الاقوامی سول ایوی ایشن آرگنائزیشن صرف پاکستان سی اے اے کو مجاز ریگولیٹری اتھارٹی تسلیم کرتا ہے، اسی لیے پی آئی اے سمیت تمام ایئرلائنز کی سیفٹی ریگولیٹری اتھارٹی سی اے اے ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسافروں کی حفاظت سول ایوی ایشن اتھارٹی کا فرض ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ سی اے اے نے پاکستان ایئرلائن اور دیگر آپریٹرز کے مسلسل حفاظتی آڈٹ اور معائنہ کو یقینی بنایا اور مؤثر ریگولیٹری نگرانی کی وجہ سے تمام آپریٹرز نے اکاﺅنٹ معیار کو بہتر بنایا ہے۔

اکاؤنٹ آڈٹ میں مدد کی پیشکش کے بیان پر ترجمان سی اے اے نے کہا کہ ڈائریٹر جنرل سی اے اے اور ان کی ٹیم کو آڈٹ کیلئے اپنی تیاری پر یقین ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں