The news is by your side.

Advertisement

فاؤنٹین ہاؤس کا دورہ کر کے دلی سکون ملا، چیف جسٹس

لاہور: چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا ہے کہ فاؤنٹین ہاؤس کا دورہ کر کے انھیں دلی سکون ملا۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے لاہور میں فاؤنٹین ہاؤس کا دورہ کرتے ہوئے کیا، انھوں نے کہا کہ ہماری پانچ نسلیں جو دنیا میں بھی ابھی نہیں آئیں ہم ان کا حق لے کر کھا چکے ہیں۔

چیف جسٹس نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہماری آنے والی پانچ نسلیں مقروض ہو چکی ہیں، قرضوں سے نجات کے لیے پوری قوم کو مل کر کام کرنا ہوگا۔

میاں ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ وہ قوم کو قرض سے نجات دلانے اور پانی فراہم کرنے کے اہم مسئلے پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ فاؤنٹین ہاؤس میں جس قسم کے انتظامات موجود ہیں ویسے انتظامات کسی سرکاری اسپتال میں بھی موجود نہیں ہیں۔

انھوں نے چیف سیکریٹری اور سیکریٹری صحت کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ اسپتالوں کو بہتر بنانے پر توجہ مرکوز کریں۔

قرضے لے کر ہم نے آنے والی پانچ نسلوں کا رزق کھالیا، چیف جسٹس


چیف جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ وہ اس لیے اسپتالوں کے لیے نکلے تاکہ حکمران اپنا کام خود کرنے لگیں، جب کوئی کام نہیں کرے گا تو مجبوراً کسی کو تو قوم کے لیے نکلنا پڑے گا۔

چیف جسٹس نے میڈیا کے کردار کی طرف بھی اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے تعمیری کاموں میں میڈیا بھی بڑھ چڑھ کر کردار ادا کرے، ان کا کہنا تھا کہ ریٹائرمنٹ کے بعد کارکن کی حیثیت سے فاؤنٹین ہاؤس کا رکن بننا چاہوں گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں