سی ڈی اے کو کوئی ایکشن لینا ہے تو پہلے وزیراعظم کے خلاف لے، چیف جسٹس کے ریمارکس
The news is by your side.

Advertisement

سی ڈی اے کو کوئی ایکشن لینا ہے تو پہلے وزیراعظم کے خلاف لے، چیف جسٹس کے ریمارکس

اسلام آباد : بنی گالہ تجاوزات کیس میں چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سی ڈی اے کو کوئی ایکشن لینا ہے تو پہلے وزیراعظم کےخلاف لے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے بنی گالہ تجاوزات کیس کی سماعت کی، سماعت میں کورنگ نالہ تعمیرات گرانے کی متاثرہ خاتون عدالت میں روپڑی ، متاثرہ خاتون نے کہا شوہر کو کینسر، بیٹاچھوٹاہےکہاں جاؤں؟ میں قبضہ مافیا نہیں، شاملات میں گھر بنایا۔

چیف جسٹس نے کہا آپ عدالتی فیصلے پر نظرثانی درخواست دائرکریں، ہر بندہ غیر قانونی گھر بنا کر کہتا ہے کوئی کارروائی نہ ہو، جس کا بھی گھر گرایا جائے اسے دکھ ہوگا۔

دوران سماعت وکیل بابراعوان نے کہا بنی گالہ کے مکینوں کو کل سے نوٹسز جاری ہونا شروع ہوئے، پہلا نوٹس وزیراعظم کو جاری ہوا ، وزیر اعظم کے گھر نوٹس وصول کیا گیا، سی ڈی اے جا کرملکیت ثابت کرینگے،دیگر کاغذات بھی دکھائیں گے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس میں آپ کی ملکیت کاتوکوئی مسئلہ ہی نہیں ہےوہ توٹھیک تھی، مسئلہ توتعمیر کا ہے وہ قانون کے مطابق تھی یانہیں، آپ نے سپریم کورٹ میں جو نقشہ جمع کرایا وہ غیر واضح ہے۔

مزید پڑھیں : بنی گالہ تجاوزات کیس، سپریم کورٹ کا عمران خان کو جرمانہ ادا کرنے کا حکم

بابر اعوان کا کہنا تھا کہ دیہاتوں میں نقشہ کسی کےپاس نہیں ہوتاتھاہمارے پاس بھی نہیں، جس پر چیف جسٹس نے کہا آپ کے پاس نقشہ،کاغذات نہیں تو سی ڈی اے دیکھے کہ کیا ایکشن ہونا ہے، جو بھی ایکشن ہونا ہے پہلے وزیرا عظم کے خلاف کیا جائے۔

یاد رہے 4 روز قبل  بنی گالہ تجاوزات کیس میں سپریم کورٹ نے عمران خان کو جرمانہ ادا کرکے رپورٹ دینے کا حکم دے دیا ، چیف جسٹس نے کہا تھا عمران خان کی اپنی پراپرٹی پر غیر قانونی تعمیرات ہیں، انہیں سب سے پہلے جرمانہ دینا ہوگا۔

جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے تھے تجاوزات کو جمعہ تک ریگولرائز کرکے بتایا جائے، وزیراعظم پاکستان کے کہنے پر یہ نوٹس لیا، عمراں خان نے وزیراعظم بننے سے پہلے5تجاویز خود دی تھیں، عمران خان اب حکومت میں ہیں ان کو اقدامات کرنے چاہئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں