ندیم بارا کے ڈیرے پر فائرنگ اور پولیس تشدد کیس، آئی جی پنجاب کو خود تحقیقات کرنے کا حکم
The news is by your side.

Advertisement

ندیم بارا کے ڈیرے پر فائرنگ اور پولیس تشدد کیس، آئی جی پنجاب کو خود تحقیقات کرنے کا حکم

لاہور : پاکستان تحریک انصاف کے نومنتخب ایم پی اے ندیم عباس بارا کے ڈیرے پر فائرنگ اور پولیس پر تشدد کے واقعہ پر چیف جسٹس نے آئی جی پنجاب کو خود تحقیقات کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس کی سربراہی میں پی ٹی آئی کے نومنتخب ایم پی اے ندیم عباس بارا کے ڈیرے پر فائرنگ اور پولیس پر تشدد کے واقعہ پر ازخود نوٹس کی سماعت ہوئی۔

چیف جسٹس نے آئی جی پنجاب کو خود تحقیقات کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ آئی جی پنجاب دیانتدار آدمی ہیں، مکمل تفتیش کریں گے اور رپورٹ دیں گے، عدالت اپنا ازخود نوٹس واپس لیتی ہے۔

سرکاری وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ واقعہ میں ملوث زیادہ تر ملزمان گرفتار کیے جاچکے ہیں اور وہ ریمانڈ پر ہیں۔

ملزم ندیم بارا کے وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ فائرنگ کا واقعہ کسی اور جگہ پیش آیا لیکن پولیس نے ملزمان گرفتار کرلئے، متعلقہ ایس پی نے ذاتی رنجش پر ندیم بارا اور ساتھیوں کیخلاف جھوٹا مقدمہ درج کیا۔

چیف جسٹس نے قرار دیا کہ تحقیقات کا حکم دے دیا ہے، حقائق سامنے آ جائیں گے۔

یاد رہے کہ چیف جسٹس نے ہنجروال میں فائرنگ اور پولیس اہلکاروں پر تشدد کے واقعہ کا ازخود نوٹس لیتے ہوئے تحریکِ انصاف کے نومنتخب رکن صوبائی اسمبلی ندیم عباس بارا کو گرفتار کرنے کا حکم دیا تھا۔

ملزمان کے خلاف تھانہ ہنجروال میں دہشتگردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا۔

واضح رہے کہ ندیم عباس بارا جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں ہیں،  پی ٹی آئی کے نومنتخب ایم پی اے پر الزام ہے کہ انہوں نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر پولیس اہلکاروں کو تشدد کا نشانہ بنایا اور فائرنگ کی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں