The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کو اربوں کا نقصان ہوگیا، ذمےداروں نے اسلام آباد میں فارم ہاؤسز بنالئے، چیف جسٹس

اسلام آباد : پی آئی اے میں بے قاعدگیوں سے متعلق کیس میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ پی آئی اے کو اربوں کا نقصان ہوگیا، ذمےداروں نے اسلام آباد میں فارم ہاؤسز بنالئے اور اب وہ لوگ پاکستان کے امیر تر ین لوگ ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں پی آئی اے میں بے قاعدگیوں سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت ہوئی، سماعت میں چیف جسٹس نے اربوں روپے کے نقصان پر آڈیٹر جنرل کو دوبارہ آڈٹ کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ فرانزک رپورٹ کی روشنی میں دوبارہ آڈٹ کروائیں جبکہ ایم ڈی پی آئی اے کو تحریر ی جواب آج ہی جمع کرانے کی بھی ہدایت کی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ پی آئی اے میں تقرریوں میں بظاہر اقرابا پروری ہوئی، اقرابا پروری برداشت نہیں کی جائے گی، کرپشن کی تحقیقات ہم نہیں کرسکتے ،معاملہ نیب کو بھیجنا پڑ ے گا یا کمیشن بنانا پڑ ے گا۔

جسٹس ثاقب نثار نے مزید کہا کہ پی آئی اے کو اربوں کا نقصان ہوگیا، ذمے داروں نے اسلام آباد میں فارم ہاؤسز بنالئے، اب وہ لوگ پاکستان کے امیر تر ین لوگ ہیں، عدالت میں کہہ دیتے ہیں کے ان کی ذمے داری نہیں تھی۔

سپریم کورٹ نے سابق ایم ڈی پی آئی اے اسلم آغا اور سابق سی ای اوشجاعت عظیم کا نام اسی ای ایل سے نکالنے کی مشروط اجازت دیتے ہوئے حکم دیا کہ دونوں بیرون ملک جانے سے پہلے اطلاع کریں گے۔


مزید پڑھیں : پی آئی اے کو 9 ماہ میں 41 ارب روپے کا خسارہ


بعد ازاں کیس کی سماعت 30جون تک ملتوی کردی گئی۔

خیال رہے کہ ایک رپورٹ کے مطابق پی آئی اے کو پچھلے سال کی نسبت پونے 7 ارب سے زائد کے خسارے کا سامنا ہے اور گزشتہ 9 ماہ کے دوران پی آئی اے کو 41 ارب 25 کروڑ سے زائد کا خسارہ ہوا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں