The news is by your side.

Advertisement

تمباکو تیار کرنے والے پودوں کی مدد سے کروناویکسین کی تیاری کا دعویٰ

لندن: سگریٹ بنانے والی کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ تمباکو تیار کرنے والے پودوں کی مدد سے کروناوائرس سے لڑنے کے لیے ویکسین تیار کررہی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سگریٹ تیار کرنے والی برٹش امریکی تمباکو (بیٹ) نامی کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ ایسے پودوں کی مدد سے کروناویکسین تیار کررہی ہے جن کے ذریعے تمباکو بنائے جاتے ہیں۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ ہم ممکنہ طور پر رواں سال جون تک ویکسین تیار کرلیں گے، کامیاب تجربے کے بعد ہر ہفتے ویکسین کی لاکھوں مقدار میں تیاری کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں۔ حکومتی ایجنسیز کی مدد سے ویکسین پر کام جاری ہے، جلد ’’کلینیکل ٹرائل‘‘ انسانوں پر کیا جائے گا۔

امریکا میں کرونا وائرس کی ایک اور ویکسین تیار

بیٹ کمپنی کا خصوصی صحت کا شعبہ ویکسین کو تیار کررہا ہے۔ قبل ازیں کمپنی نے ایبولا وائرس کی ویکسین بھی تیاری کی تھی۔ کمپنی کے طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ تمباکو پلانٹ میں ایسے اجزا پائے گئے جو کروناوائرس سے بھی لڑسکتے ہیں۔

ڈیوڈ اوریلی نامی سائنس دان کا کہنا ہے کہ کروناوائرس کی ویکسین تیار کرنا ایک بڑا چیلنج ہے لیکن ہمیں امید ہے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے تمباکو پلانٹ کی مدد سے ویکسین تیار کرلیں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے مذکورہ پودوں کو سگریٹ کی تیاری کے علاوہ متبادل کے طور پر ویکسین کی تیاری کا سوچا اور تحقیق کے بعد لائحہ عمل تیار کیا، امید ہے کامیاب ہوں گے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں