The news is by your side.

Advertisement

مفتی عبداللہ حملے میں دہشت گردوں کا فوڈ سپلائی سے مشابہت رکھنے والی موٹرسائیکلیں استعمال کرنے کا انکشاف

 کراچی : ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمرشاہد نے مفتی عبداللہ حملے میں دہشت گردوں کا فوڈ سپلائی سے مشابہت رکھنے والی موٹرسائیکلیں استعمال کرنے کا  انکشاف کیا اور بتایا کہ را اس نیٹ ورک کو آپریٹ کرتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمرشاہد نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے مولاناعبداللہ پرقاتلانہ حملہ میں ملوث نیٹ ورک کوبے نقاب کرتے ہوئے کہا کہ چند روز قبل مولانا عبداللہ پر جمشید کوارٹر میں قاتلانہ حملہ ہوا ، سی ٹی ڈی نے تحقیقات کیں تو انکشاف ہوا فرقہ ورانہ نیٹ ورک نہیں بلکہ لیاری گینگ وار پر مشتمل زاہد شوٹر نامی دہشت گرد نے گروپ بنا رکھا تھا۔

عمرشاہد کا کہنا تھا کہ بھارتی ایجنسی را اور دیگرغیرملکی ایجنسیوں کے لیے کام کر رہا تھا، مولانا پر حملہ فرقہ ورانہ فسادات کرانے کے لیے تھے، ٹارگٹ کلر ڈلیوری بوائے کے روپ میں اسلحے اور پیسے کی لین دین کررہے تھے۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی نےکہا کہ مولانا حمد اللہ ان کی ٹارگٹ ہٹ لسٹ میں نہیں تھے، ان کی ہٹ لسٹ کافی لمبی تھی۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی نے مفتی عبداللہ حملے میں دہشت گردوں کا فوڈ سپلائی سے مشابہت رکھنے والی موٹرسائیکلیں استعمال کرنے انکشاف کرتے ہوئے کہا تمام آن لائن ڈیلیوری سروسز کی مکمل چھان بین کرنے کا فیصلہ کیا ہے ، فوڈ پانڈا اور بائیکا سمیت تمام کا ریکارڈ اکھٹا کریں گے، تمام کمپنیاں متعلقہ ڈیٹا جمع کرانے کی پابند ہوں گی۔

عمر شاہد کا کہنا تھا کہ ماضی میں کے کےایف کی ایمبولینس بھی استعمال کی گئی ، معاملہ ہاتھ سے نکلنے سے پہلے ان معاملات پر کڑی نظر رکھیں گے، حملے میں ہتھیار اور رقم کی منتقلی آن لائن ڈیلیوری کی موٹر سائیکلوں پر کی گئی۔

دوسری جانب راجہ عمرخطاب نے کہا کہ ٹارگٹ کلر ڈلیوری بوائےکےروپ میں کارروائیاں کرتےہیں، گروپ کے تمام لڑکے پیشہ ور قاتل ہیں ، گروپ میں گولیمار ، لیاری کے جرائم پیشہ افراد شامل کیے گئے ، را اس نیٹ ورک کو آپریٹ کرتی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ میڈیا پر 10لاکھ تنازعے پر قتل کی خبریں چلیں ، رقم کاکوئی تنازعہ نہیں تھا ، خبر بے بنیاد تھی ، شاہد شوٹر ٹیم کا کوڈ نام ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں