کلائمٹ چینج سے عظیم اہرام مصر بھی خطرے میں -
The news is by your side.

Advertisement

کلائمٹ چینج سے عظیم اہرام مصر بھی خطرے میں

تاریخ اور سیاحت سے دلچسپی رکھنے والے افراد کے لیے مصر کے عظیم اہرام نہایت دلچسپی کے حامل ہیں جہاں کی سیر کرنا اور اس کے رازوں کو جاننا یکساں اہمیت کا حامل ہے۔

تاہم ایسے افراد کے لیے بری خبر ہے کہ ہزاروں سال سے قائم یہ اہرام اب خطرے کا شکار ہوگئے ہیں جس کی وجہ کچھ اور نہیں بلکہ موسمیاتی تغیر یعنی کلائمٹ چینج ہے۔

اہرام مصر پر تحقیق کرنے والے ماہر آثار قدیمہ مصطفیٰ النبی اس علاقے کے حوالے سے نہایت اہم انکشافات کرتے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ گزشتہ کئی برسوں سے اس علاقے میں آثار قدیمہ پر کام کر رہے ہیں اور گزشتہ کئی برسوں سے ایک ہی موسم دیکھتے آرہے ہیں۔ تاہم اب اس موسم میں غیر متوقع تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں۔

ان کے مطابق اکتوبر سے اپریل تک یہاں یکساں موسم ہوتا تھا جس میں وہ نہایت آرام سے کام کرتے تھے، تاہم اب اس عرصے کے دوران موسم میں کئی تبدیلیاں دیکھنے میں آرہی ہیں۔

ان کے مطابق ان 7 ماہ کے دوران کسی دن اچانک سخت سردی پڑتی ہے، پھر دوسرے ہی دن سردی حیران کن طور پر نہایت کم ہوجاتی ہے۔ اسی طرح کبھی کبھی اچانک یہاں بوندا باندی شروع ہوجاتی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ موسم کا یہ تغیر صرف کسی مخصوص علاقے میں نہیں بلکہ پورے مصر میں ظاہر ہورہا ہے۔ اس سے قبل مصر میں موسم گرما کافی سخت ہوتا تھا تاہم اب اس کی شدت میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔

مزید پڑھیں: تاریخی دریائے نیل کلائمٹ چینج کی ستم ظریفی کا شکار

مصطفیٰ کا کہنا ہے کہ چبھتی ہوئی شدید دھوپ کے باعث ان عظیم اہراموں میں اب دراڑیں بھی پڑنے لگی ہیں۔ ’شاید وہ وقت دور نہیں جب صدیوں سے قائم یہ اہرام کسی روز دھڑام سے نیچے گر پڑیں‘۔

اہرام مصر، مصر کے اہم سیاحتی مقامات میں سے ایک ہے اور ملکی معیشت میں اس کا بڑا کردار ہے۔ ماہرین کے مطابق اہرام مصر میں خرابی یا تباہی مصر کی سیاحت و معیشت پر بھی بدترین اثرات مرتب کرے گی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں