site
stats
حیرت انگیز

ننگے پاؤں سنگلاخ پہاڑوں کو سرکرنے والا باہمت پاکستانی

عموماً لوگ ٹریکنگ یا ہائیکنگ کے لیے انتہائی مہنگے اور موزوں جوتے خریدتے ہیں لیکن کیا آپ نے تصور کیا ہے کہ کوئی شخص پا برہنہ کسی سنگلاخ پہاڑ کو اپنے قدموں تلے روند دے‘ پاکستان کے قدرت علی نے یہ کارنامہ انجام دیا ہے۔

جی ہاں! 47 سالہ قدرت علی کا تعلق ہنزہ سے ہے اور انہوں نے حال ہی میں شاہراہ قراقرم پرننگے پاؤں ایک طویل سفر سر انجام دیا ہے‘ اتنا طویل کے شہروں میں رہنے والے ٹریکنگ کےاعلیٰ ترین جوتے پہن کر بھی ایسا کچھ کرنے کاسوچ بھی نہیں سکتے۔


قدرت علی نے اپنی اس مہم کا نام ’کلائمب فار پیس‘ یا کوہ پیمائی برائے امن رکھا ہے اور اس کے تحت انہیں نے شاہراہ ِ قراقرم پر 205 کلومیٹر سفر کیا اور 4583 کی چڑھائی بھی سر کی اور یہ تمام تر سفرانہوں نے پا پیادہ انجام دیا ہے۔

قدرت علی اپنی فیس بک پوسٹ میں لکھتے ہیں کہ ’’ میں اکثرسوچا کرتا تھا کہ قدیم تہذیبوں کے غلام پا برہنہ رہا کرتے تھے کہ اس دور میں جوتے پہننا حاکمیت کی نشانی تھی‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’’ننگے پاؤں اس سفرکے دوران میں نے زمین کو محسوس کیا‘ میں آہستگی سے قدم رکھتا‘ ہوا کی سرسراہٹ کو محسوس کرتا‘ سورج کی تمازت کو اپنے اندر جذب کرتاہوں‘‘۔

وہ جہاں بھی گئے عوام نے ان کا پرجوش استقبال کیا اور ان کے جذبے کوسراہا‘ انہوں نے ان تمام لوگوں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے ان کا استقبال کیا۔

قدرت علی کا کوئی پیمائی کا سفر


قدرت علی اب تک کئی عظیم پہاڑوں پر پاکستان کا پرچم لہرا چکے ہیں جن میں عظیم کے ٹو‘ نانگا پربت‘ براڈ پیک‘ ماشابروم اور کئی دیگر شامل ہیں۔ انہیں نانگا پربت سر کرنے پر 2004 میں حکومتِ پاکستان کی جانب سے اعزازی شیلڈ سے بھی نوازا گیا تھا جبکہ 2005 میں بیسٹ پرفارمنس ایوارڈ بھی دیا گیا تھا۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top