The news is by your side.

نوشہرہ میں ریلیف کیمپ بند کرنے کا فیصلہ

پشاور: مقامی انتظامیہ نے نوشہرہ میں ریلیف کیمپ بند کرنے کا فیصلہ کر لیا، اور متاثرین کو گھروں کو جانے کی ہدایت کر دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق فلڈ سیل نے کہا ہے کہ دریائے کابل میں نوشہرہ کے مقام پر پانی کی سطح میں مزید کمی ریکارڈ کی گئی ہے، اور ملک کے تمام دریاؤں میں اس وقت پانی کا بہاؤ معمول کے مطابق ہے۔

فلڈ سیل کے مطابق دریائے کابل میں نوشہرہ کے مقام پر اس وقت پانی کا بہاؤ 79 ہزار 600 کیوسک ہے، جب کہ ضلعی انتظامیہ نے کہا ہے کہ پانی کا بہاؤ اب نارمل ہے۔

ڈپٹی کمشنر نوشہرہ نے کہا ہے کہ انتظامیہ نے آج سے ریلیف کیمپس بند کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے، متاثرہ علاقوں کے لوگ اپنے گھروں کو جا سکتے ہیں، انتظامیہ آج سے متاثرہ علاقوں کا ڈیٹا جمع کرے گی۔

ڈی سی نے کہا کہ متاثرہ علاقوں کے لوگ اپنے گھروں کو جائیں تاکہ صفائی کا کام شروع کیا جائے اور ان نقصانات کا ڈیٹا اکٹھا کیا جا سکے۔

دوسری طرف فلڈ سیل کے مطابق دریائے کابل میں ورسک کے مقام پر پانی کا بہاؤ 32 ہزار کیوسک ہے، ادینزئی پل کے مقام پر پانی کا بہاؤ 23 ہزار 182 کیوسک ہے، جب کہ دریائے سندھ میں بھی پانی کا بہاؤ معمول کے مطابق ہے۔

دریائے سندھ میں اٹک کے مقام پر پانی کا بہاؤ 2 لاکھ 46 ہزار 800 کیوسک ہے، چشمہ کے مقام پر درمیانی درجے کا سیلاب ہے، اور 2 لاکھ 30 ہزار 454 کوسک ریلا گزر رہا ہے، تربیلا کے مقام پر پانی کا بہاؤ 1 لاکھ 79 ہزار کیوسک ہے۔

فلڈ سیل کے مطابق دریائے سوات میں منڈا کے مقام پانی کا بہاؤ نارمل ہے، منڈا ہیڈ ورسک کے مقام پر پانی کا بہاؤ 18 ہزار 800 کیوسک ہے، جب کہ چارسدہ خیالی کے مقام پر پانی کا بہاؤ 19 ہزار 81 کیوسک ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں