The news is by your side.

Advertisement

تعلیمی اداروں کی بندش، این سی سی کا موقف سامنے آگیا

اسلام آباد : نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی نے ملک بھر میں تعلیمی اداروں کی بندش کے فیصلے کی توثیق کردی جبکہ مساجد میں ایس او پیز پر عملدرآمد کےلیے علمائے کرام سے تعاون کی ہدایت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں کرونا وائرس کی دوسری لہر پر قابو پانے کےلیے حکومت کی جانب سے موثر اقدامات اٹھائے جارہے ہیں، اسی سلسلے میں وفاقی وزارت تعلیم نے ملک بھر میں تعلیمی ادارے بند کرنے کی تجویز قومی رابطہ کمیٹی میں پیش کی تھی جس کی این سی سی نے توثیق کردی ہے۔

نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی ( این سی سی ) کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا جس میں بڑے فیصلے کیے گئے۔

این سی سی نے فیصلوں کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے، جس کے مطابق ریسٹورنٹس میں ان ڈورڈائننگ کی اجازت نہیں ہوگی جبکہ عوامی اجتماعات پر بھی پابندی کے فیصلے پر عمل درآمد کیا جائے گا۔

این سی سی نے ملک بھر میں ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کرانے کی ہدایت کی ہے جبکہ مساجد میں ایس او پیز پر عملدرآمد کےلیے علمائے کرام سے تعاون لینے کی ہدایت کی گئی ہے۔

کرونا کی بگڑتی صورت حال، انڈور ریسٹورنٹس پر پابندی عائد

کچھ دیر قبل اسلام آباد میں معاونِ خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کا کہنا تھا کہ ہمارے لیے اسکول اور تعلیمی ادارے بند کرنے کا فیصلہ آسان نہیں تھا مگر بچوں کی حفاظت کے لیے یہ قدم اٹھایا۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’11 جنوری کو صورت حال دیکھ کر اسکول کھولنے کا فیصلہ کریں گے‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں