The news is by your side.

Advertisement

کراچی ضمنی الیکشن: وزیراعلیٰ سندھ نے وفاق سےفوج اور رینجرزکی خدمات مانگ لیں

کراچی: سندھ میں کراچی کے حلقہ پی ایس 106, پی ایس 107 اور نوشہروفیروز کے حلقہ پی ایس 22 میں دو جون کو ضمنی انتخابات ہوں گے ۔

کراچی میں ضمنی الیکشن کے موقع پر دوصوبائی حلقے میں ایک دن پولنگ ہوگی حلقے کے گلی کوچوں میں میلہ سا لگا ہے، مہم کے آخری روز ایم کیو ایم کی ریلی نے کارکنوں کاجوش بڑھایا، پی ایس ایک سو چھ سے متحدہ کے محفوظ یارخان ،پیپلز پارٹی کےسردار عبدالصمداور پی ٹی آئی کی نصرت انوار سمیت چودہ امیدوارمیدان میں ہیں۔

پی ایس ایک سو سترہ سے میجرریٹائرڈ قمرعباس رضوی کا نشان پتنگ ہے،جاویدمقبول تیراورفاقت عمر بلے کے ساتھ مدمقابل ہیں دونوں نشستیں افتخارعالم اورڈاکٹرصغیر کی پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت کے بعد خالی ہوئی تھیں۔

ناخوشگوارصورتحال سےنمٹنےکے لئےوزیراعلیٰ سندھ نےوفاق سےفوج اوررینجرزکی خدمات مانگ لیں، رینجرزہیڈکواٹر میں بڑوں کی بیٹھک بھی ہوئی، ڈی جی رینجرزکی زیرصدارت اجلاس میں اے آئی جی مشتاق مہر اوررینجرزکے سیکٹر کمانڈرز نے سیکیورٹی پلان کو حتمی شکل دی۔

وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے دو جون کو ہونیو الے تین صوبائی اسمبلی کے حلقوں میں ضمنی انتخاب کیلئے پاک فوج یا رینجرز تعینات کرنے کیلئے وفاقی حکومت کو خط لکھنے کے احکامات دیدیے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے سندھ حکومت کو کہا ہے کہ پولنگ اسٹیشنز کے اندر اور باہر پاک فوج یا رینجرز تعینات کی جائے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے الیکشن کمیشن کی درخواست پر محکمہ داخلہ کو کہا ہے کہ وفاقی وزارت داخلہ کو فوج یا رینجرز تعینات کرنے کیلئے فوری طور پر خط لکھیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں