The news is by your side.

Advertisement

پشتون کارڈ کی سیاست ناقابل قبول ہے، وزیراعلیٰ کے پی محمود خان

پشاور: وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ پشتون کارڈ کی سیاست ناقابل قبول ہے، فوج، اداروں اور قوم کی قربانیوں سے قبائلی علاقوں میں امن آیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلی کے پی محمود خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چند عناصر معصوم پشتون عوام کو مفادات کے لیے استعمال کررہے ہیں، عوام مذموم عزائم رکھنے والے چند عناصر سے محتاط رہیں۔

انہوں نے کہا کہ صوبائی اسمبلی خیبرپختونخوا کے عوام کی حقیقی نمائندہ ہے، وفاقی، صوبائی سطح پر پختون فیصلہ سازی میں شامل ہیں، سابق فاٹا سمیت صوبے کے مسائل کے حل کے لیے دن رات کام کررہے ہیں۔

وزیراعلیٰ کے پی نے کہا کہ معصوم عوام کو استعمال کرنے والے جنگ کی طرف دھکیلنا چاہتے ہیں، 10 ماہ میں قبائلی عوام کے بہت سے مسائل حل ہوئے ہیں، قبائلی اضلاع کی ترقی کے لیے این ایف سی ایوارڈ سے 3 فیصد مختص کیا ہے۔

مزید پڑھیں: مہمند ڈیم کی نوکریوں میں مقامی افراد کو سو فیصد ترجیح دیں گے، محمود خان

محمود خان نے کہا کہ لیویز، خاصہ دار فورس کے 28000 اہلکاروں کو پولیس میں ضم کیا، نوجوانوں کو سود سے پاک قرضے دئیے گئے۔

انہوں نے کہا کہ حکومتی عزم کا ثبوت ہے کہ وہ ان اضلاع کی ترقی کا وعدہ پورا کرے گی، مفت صحت سہولیات کی فراہمی بھی حکومتی سپورٹ کا واضح ثبوت ہے۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ کے پی کی زیر صدارت ترقیاتی بجت کا جائزہ اجلاس ہوا جس میں قبائلی اضلاع میں میگا پراجیکٹس کو اے ڈی پی میں شامل کرنے کی ہدایت دی گئی۔

محمود خان نے کہا کہ اسکیموں کی توسیع نہیں خدمات کی فراہمی پر توجہ مرکوز ہے، جیلوں سے متعلق اسکیموں کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے، آئندہ بجت میں سیاحت کے لیے تورازم زون بنائے جائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں