این ایف سی میں سندھ کو اس کا حصہ ملنا چاہیے، وزیرِ اعلیٰ سندھ -
The news is by your side.

Advertisement

این ایف سی میں سندھ کو اس کا حصہ ملنا چاہیے، وزیرِ اعلیٰ سندھ

کراچی: سندھ کے نو منتخب وزیرِ اعلیٰ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ قومی مالیاتی کمیشن (نیشنل فنانس کمیشن) میں سندھ کو اس کا جائز حصہ ملنا چاہیے، قومی معیشت میں سب سے زیادہ حصہ سندھ ڈالتا ہے۔

وہ کابینہ کے ہم راہ مزارِ قائد پر حاضری دینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے، انھوں نے کہا ’میری کابینہ تجربہ کار اور متوازن ہے، وفاق نے سندھ کو حقوق دیے تو اس کی ہر اچھی چیز کو سپورٹ کریں گے۔‘

وزیرِ اعلیٰ کا کہنا تھا کہ احتساب ہونا چاہیے مگر سیاسی انتقام کے نام پر نہیں۔ خیال رہے کہ وزیرِ اعظم عمران خان نے حلف اٹھانے کے بعد اعلان کیا ہے کہ کرپٹ سیاست دانوں کا کڑا احتساب کیا جائے گا۔

مراد علی شاہ نے کہا ’سندھ کے عوام نے پیپلز پارٹی پر بھروسا کیا، اللہ ہمیں سندھ کی خدمت کرنے کے لیے ہمت دے، ہم پانی اور آبادکاروں کے مسائل حل کرنا چاہتے ہیں۔‘


مزید پڑھیں:  سندھ کی نئی کابینہ کے 8 ارکان نے حلف اٹھا لیا


قبل ازیں وزیرِ اعلیٰ سندھ نے اپنی نئی کابینہ کے ساتھ مزارِ قائد پر حاضری دی، وزیرِ اعلیٰ سندھ اور کابینہ ارکان نے مزار قائد پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔ واپسی پر مراد علی شاہ پیپلز چورنگی پر کارکنوں سے بھی ملے۔

وزیرِ اعلیٰ سندھ نے مزارِ قائد حاضری کے موقع پر ملک کی ترقی اور سالمیت کے لیے خصوصی دعائیں کیں، کل بے نظیر بھٹو کے مزار پر بھی کابینہ کے ساتھ حاضری دیں گے۔

واضح رہے کہ 2010 میں 18 ویں ترمیم کی منظوری کے بعد قومی مالیاتی کمیشن (NFC) کے ساتویں ایوارڈ کا اجرا پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت کی بڑی کار گزاری تھی۔ اس سے قبل قومی وسائل آبادی کی بنیاد پر تقسیم ہوتے تھے جس سے سب سے بڑا حصہ پنجاب لے جاتا تھا جب کہ باقی تین صوبے ٹیکسوں کی وصولی، پس ماندگی اور غربت کو فارمولے کا حصہ بنانا چاہتے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں