The news is by your side.

Advertisement

سانحہ مری، وزیراعلیٰ پنڈی انتظامیہ پر برہم، اجلاس کی اندرونی کہانی

وزیراعلیٰ‌پنجاب عثمان بزدار اجلاس میں‌ سانحہ مری کے حوالے سے افسران پر برس پڑے، متعلقہ افسران کسی سوال کا تسلی بخش جواب نہ دے سکے.

اے آر  وائی نیوز  کے مطابق سانحہ مری سے متعلق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی زیرصدارت اجلاس ہوا جس میں کیا کیا ہوا اس کی اندرونی کہانی سامنے آگئی۔

ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سانحہ مری کے حوالے سے راولپنڈی انتظامیہ کی نااہلی پر برہم ہوگئے اور افسران کو جھاڑ پلادی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار  نے راولپنڈی ڈویژن سے استفسار کیا کہ مری میں ہونے والے سانحے کو پہلے کیوں نہیں روکا گیا، ایک لاکھ 64ہزارگاڑیاں مری چلی گئیں آپ لوگ کیا کررہےتھے؟

انتظامیہ نے جواب دیا کہ ہم نے مینیج کرنے کی کوشش کی لیکن غیرمعمولی برفباری سے حالات خراب ہوئے۔ ہم نے 20 ہزار گاڑیوں کو مری میں داخل ہونے سے روکا اور انہیں واپس بھیجا۔

انتظامیہ کا مزید کہنا تھا کہ سال نو پر ایک لاکھ گاڑیاں مری آئی تھیں لیکن برفباری نہ ہونے کی وجہ سے حالات قابو میں رہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ اس صورتحال میں ہوٹلز نے منہ مانگے کرائے لیے اس کا نوٹس کیوں نہیں لیا گیا جس پر انتظامیہ نے اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ ہوٹلز نے کرائے بہت زیادہ بڑھا دیے تھے۔

ذرائع کے مطابق اس موقع پر کمشنر،سی پی او،سی ٹی اواورڈی سی سےعلیحدہ علیحدہ پوچھ گچھ ہوئی لیکن متعلقہ افسران وزیراعلیٰ پنجاب کو تسلی بخش جواب نہ دے سکے۔

عثمان بزدار نے افسران کے جوابات پر اپنے عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ تو اب انکوائری میں پتہ چلے گا کہ سانحے کو روکنے کے لیے پہلے اقدامات کیوں نہیں کیے گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں