The news is by your side.

Advertisement

شہبازشریف کی جنرل اسپتال آمدعوام کیلئے وبال جان بن گئی

لاہور : وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف لاہور دھماکے میں زخمی ہونے والے افراد کی عیادت کیلئے جنرل ہسپتال پہنچے تو ان کی آمد مریضوں اوران کے تیمار داروں کیلئے وبال جان بن گئی، سیکیورٹی اہلکاروں نے لواحقین کو دھکے دے کر نکال دیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف زخمیوں کی عیادت کیلئے جنرل اسپتال پہنچے تو انتظامیہ نے حفاظتی اقدامات کے تحت مریضوں کے لواحقین کو ہسپتال ایمرجنسی میں داخل ہونے سے روک دیا، اندر جانے پر ایک شہری کو سکیورٹی گارڈ اور پولیس نے دھکے دے کر باہر نکال دیا۔

شہری زخمی عزیز سے ملنے کیلئے اندر جانے کی دہائیاں دیتا رہا، اس کا کہنا تھا کہ مجھے بیٹی اور بھائی کو کھانا دینے سے روک دیا گیا ہے، وزیراعلیٰ پنجاب کے وی آئی پی پروٹوکول کے باعث مریضوں اور ان کے لواحقین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

یاد رہے کہ لاہور جنرل اسپتال میں دھماکے کے 39 زخمی زیر علاج ہیں، جن میں سے18زخمیوں کی حالت انتہائی تشویشناک ہے۔

اسپتال ذرائع کے مطابق آنے والی تمام لاشوں کو جناح اسپتال منتقل کیا گیا تھا، دوسری جانب جناح اسپتال میں دھماکے کے 15زخمی زیر علاج ہیں چار کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے، جناح اسپتال آنے والی 13شہداء کی میتیں مردہ خانہ منتقل کردی گئی ہیں۔

علاوہ ازیں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے اتفاق اسپتال پہنچ کر لاہور دھماکے میں زخمی ہونے والے افراد اور پولیس اہلکاروں کی بھی عیادت کی۔

وزیراعلیٰ مختلف وارڈز میں گئے وہ ہر زخمی سے فرداً فرداً ملے اور ان کی خیریت دریافت کی، اس موقع پر انہوں نے اسپتال انتظامیہ کو ہدایت کی کہ زخمیوں کے علاج معالجے میں کسی قسم کی کوتاہی نہ برتی جائے اور تمام طبی سہولیات فراہم کی جائیں۔

اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ بزدل اور درندہ صفت دشمن نے سفاکانہ کارروائی کی ہے، قوم اس کا بدلہ ضرور لے گی، معصوم پاکستانیوں کے خون سے ہاتھ رنگنے والے اپنے عبرتناک انجام سے بچ نہیں سکتے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں