shahbaz نیب کا مجھے طلب کرنا بدنیتی کے سوا کچھ نہیں تھا، شہباز شریف
The news is by your side.

Advertisement

نیب کا مجھے طلب کرنا بدنیتی کے سوا کچھ نہیں تھا، شہباز شریف

لاہور : وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے کہا کہ میں نے قوم اوراپنے صوبے کا پیسہ بچایا ہے، اگر یہ جرم ہے تو کروڑ بار کروں گا، آشیانہ اسکیم کا ٹھیکہ سب سے کم بولی والی پارٹی کو دیا گیا، نیب کی جانب سے مجھے طلب کرنا بد نیتی پر مبنی تھا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نیب لاہور کے دفتر میں پیشی کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے انہیں آشیانہ ہاؤسنگ اسکیم اسکینڈل میں طلب کیا تھا، ان کی طلبی بدنیتی پر مبنی تھی۔

شہباز شریف نے کہا کہ مجھ پر الزام ہے کہ میں نے اپنے اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے آشیانہ ہاﺅسنگ اسکیم میں من پسند لوگوں کو ٹھیکہ دیا، نیب کو بتادیا ہے کہ اسکیم میں17سو روپے کی بولی سب سے زیادہ تھی جبکہ کم سے کم بولی نو سو روپے فی مربع فٹ تھی۔

میں نے سب سے کم بولی دینے والی کمپنی کو ٹھیکہ دیا اور قوم کے اربوں روپے بچائے، انہوں نے واضح کیا کہ اگر ملک و قوم کا پیسہ بچانے اور کرپشن کا راستہ روکنے کے لئے مجھے ایک کروڑ بار بھی اختیارات سے تجاوز کرنا پڑا تو میں یہ کام ہر بار کروں گا۔

احتساب کریں لیکن سیاست نہیں کریں لیکن افسوس یہاں دہرا معیار اختیار کیا جارہا ہے، نیب کے چیئرمین جسٹس ( ر) جاوید اقبال سے درخواست ہے کہ وہ سب کے خلاف کارروائی کریں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مجھ پر ایک دھیلے کی کرپشن بھی ثابت ہوئی تو استعفیٰ دے کر خود گھرچلاجاؤں گا، احتساب کے نام پر سیاست اور انتقام ہو رہا ہے۔

شہباز شریف نے مزید کہا کہ شفاف احتساب صرف ہی الیکشن نہیں بلکہ قیامت تک جاری رہنا چاہئے، احتساب کے نام پر سیاست اور انتقام کو قوم قبول نہیں کرے گی۔

وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ آصف زرداری کیا بادشاہ ہیں35ارب کا منصوبہ بغیر بولی الاٹ کردیا گیا، بڑے لوگ سیاسی بنیادوں پر اربوں روپے کے قرضے معاف کراچکے ہیں۔

نندی پورکی فائل بابراعوان نے 3 سال تک اپنے پاس رکھی، ڈھائی ارب روپے میں ایک کلو واٹ تک بجلی نہیں بنائی جاسکی، نندی پور پروجیکٹ کی بولی نہ ہونا بابراعوان کا جرم ہے۔

تحریک انصاف کی طرز سیاست پر تنقید کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ ہمیں بدترین القابات سے آپ کی وجہ سے ہی نوازتے ہیں، اورنج لائن منصوبے کے 22 مہینے پی ٹی آئی نے ضائع کرائے اس کا حساب لیں گے، 2018میں موقع ملا تو پاکستان کی لوٹی دولت واپس لائیں گے۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ ہم معاشی طور پرخود مختارملک نہیں ہیں، کشکول اٹھانے والے اپنے فیصلے خود نہیں کرسکتے، ایسے مذاق سے آپ مجھے کام کرنے سے روک نہیں سکتے اور نہ ہی ایسا مذاق کرنے سے پنجاب میں ترقی کی رفتار کم ہوگی۔


مزید پڑھیں: آشیانہ ہاؤسنگ میں اربوں روپےکی کرپشن کا الزام ، شہبازشریف نے بیان ریکارڈ کرا دیا


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر ضرور شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں