The news is by your side.

Advertisement

پیپلزپارٹی میں کوئی تضاد نہیں، تمام فیصلے مشاورت سے ہوتے ہیں، قائم علی شاہ

کراچی : وزیر اعلی سندھ قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی میں کوئی تضاد نہیں اور پارٹی میں تمام فیصلے مشاورت سے ہوتے ہیں، قیادت کا جو بھی فیصلہ ہوگا وہ پارٹی اور سندھ کی بہتری کیلئے ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کلچرل ڈیپارٹمنٹ  لیاقت لائبریری کے دورے کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا، وزیر اعلیٰ سندھ اس موقع پر کالے سوٹ کے ساتھ کالی ٹائی زیب تن کیے ہوئے تھے۔

قائم علی شاہ نے وزارت اعلیٰ سے سبکدوشی پر لب کھولنے کے بجائے پارٹی اختلافات کا تاثر زائل کرنے پر بات کی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم سب ایک ہیں پارٹی قیادت جو فیصلہ کریگی وہ ہمیں من و عن قبول ہے۔ انہوں نے پارٹی فیصلے پر شاعرانہ انداز میں تبصرہ کرتے ہوئے شعرعرض کیا کہ۔۔

’’سر تسلیم خم ہے، جو مزاج یار میں آئے‘‘

انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد صوبے کی ترقی ہے اور بالخصوص کراچی کو ان مسائل سے نجات دلانا ہے کہ جس کا اس کو آج کل سامنا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ پارٹی کے کارکن ہیں اور ایک کارکن کی حیثیت سے کام کریں گے تاہم اپنے 8 سالہ دور اقتدار کا حساب عوام کے سامنے دیں گے۔

قائم علی شاہ نے کہا کہ انہوں نے سندھ کی ترقی اور خوشخالی ، روزگار، تعلیم اور صحت کے میدان میں بہت کام کیا۔ سید قائم علی شاہ نے اس بات اعتراف کیا کہ تاریخی کتب گاہ نظرانداز کی جا رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کلچرل ڈیپارٹمنٹ کی لائبریری تاریخی لائبریری ہے،لائبریری میں کتابوں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا تاکہ لوگوں کو مفید لٹریچر پڑھنے کو ملے اور یہاں آنے والوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہو گا۔

قبل ازیں وزیراعلیٰ سندھ جب تقریب میں شرکت کیلئے آئے تو ان کے ہمراہ امریکی قوصل خانے کے سربراہ بھی موجود تھے۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں