The news is by your side.

Advertisement

گرین لائن کو جلد از جلد شروع کیا جائے ، وزیراعلیٰ سندھ

کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ کے زیر صدارت اجلاس میں گرین لائن کی اہم شاہراہ پر روٹ کی تعمیر سےمتعلق امور پر گفتگو کرتے ہوئے گرین لائن کو جلد از جلد آپریشنل بنانے کی ہدایت کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق آج ہونے والے اعلیٰ سطحی اجلاس میں گرومندر سے آگے کے روٹ کی تعمیر کی راہ میں پیش آنے والی رکاوٹوں کاجائزہ لیا گیا، اس موقع پر وزیر اعلیٰ کو یوٹیلٹی کے مسائل سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی ۔

بریفنگ میں کہا گیا کہ ایم اے جناح روڈ کے نیچے پانی کی پرانی پائپ لائن ہےجومتاثرہوسکتی ہے، جس پر وزیر اعلی ٰ سندھ کا کہنا تھا کہ پانی کی یہ پرانی لائن بہترین حالت میں ہےاور انجینئرنگ ٹیکنیک کےذریعے اسے طویل عرصے کے لیے محفوظ کیا جاسکتا ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا کہ ٹریک پر انڈرپاسزکی تعمیر سےیوٹیلٹی سہولیات کی شفٹنگ کرنا ہوگی جو کہ بڑے مسائل پیداکرسکتی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ کیپری سینما سےمیونسپل پارک تک کراس روڈ پرسگنل کابندوبست کیا جائے، ضرورت اس بات کی ہے کہ گرین لائن کو جلد ا ز جلد شروع کیا جائے، پہلے ہی یہ منصوبہ بہت تاخیر کا شکار ہوچکا ہے۔

خیال رہے کہ چند دن قبل اے آر وائی نیوز نے ایک خصوصی رپورٹ میں کہا تھا کہ کراچی میں ٹرانسپورٹ کے دیرینہ مسئلے کے حل کے لیے لایا جانا والا گرین لائن بس منصوبہ تین سال بعد بھی تاخیر کا شکار ہے، شہری تا حال منصوبے کی تکمیل کے منتظر ہیں۔

رپورٹ کے مطابق وفاق اور سندھ میں اختلافات کے بعد سے وفاق نے یہ منصوبہ اپنے کنٹرول میں لے لیا تھا، بسوں کی خریداری کے لیے نئے بجٹ میں ڈھائی ارب روپے بھی مختص کیے جا چکے ہیں۔

22 کلو میٹر پر مشتمل گرین لائن بس منصوبے کے ٹریک پر 22 اسٹیشن تھے لیکن یہ اسٹیشنز ابھی تک مکمل نہیں کیے گئے ہیں اور تعمیراتی کام تا حال جاری ہے۔

اسی حوالے سے چند دن قبل میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا تھا کہ اورنج لائن ہماری ذمہ داری ہے، گرین لائن مکمل ہونے سے پہلے اورنج لائن چلا دیں گے۔وزیر اعلیٰ نے مزید کہا تھا کہ گرین لائن سے پہلے اورنج لائن مکمل ہو جائے گی، جب کہ یلو لائن پر عالمی بینک نے قرضہ دینے کا کہہ دیا ہے، ورلڈ بینک سے لون ایگریمنٹ بھی ہو گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں