عمران خان کو پوری اجازت ہے جتنے جلسے کرنے ہیں کرلو،مراد علی شاہ sindh
The news is by your side.

Advertisement

عمران خان کو پوری اجازت ہے جتنے جلسے کرنے ہیں کرلو،مراد علی شاہ

کراچی : وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ عمران خان جو چاہیں کرلیں سندھ کے عوام پیپلزپارٹی کوسپورٹ کرتے ہیں، عمران خان کو پوری اجازت ہے جتنے جلسے کرنے ہیں کرلو، درگاہ کی زیارت نصیب نہ ہونا یہ عمران خان کی بدقسمتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا پیپلزپارٹی نے ہمیشہ کشمیر کے معاملے کو اجاگر کیا، مسئلہ کشمیر کودیگرحکومتوں نے اتنا اجاگر نہیں کیا جتنا کرنا چاہئے تھا، عمران خان سندھ میں آئے ہیں تو کسی غیرملک میں نہیں آئے ، عمران خان نے سیہون میں جلسہ کرکے مہربانی کی۔

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ مزار پر جانے کا پروگرام نہیں دیا تھا،انتظامیہ کو پہلے اطلاع کرنا پڑتی ہے، عمران خان نے ڈراما کیا کہ مزار کے دروازے بند کردیئےگئے، دروازے بند تھے تو شاہ محمود قریشی کیا چھلانگ مار کرگئے تھے، شاہ محمود قریشی کو زبان سنبھال کربات کرنی چاہئے، شاہ محمود قریشی کی میں عزت کرتا تھا۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ عمران خان کا بلاوا نہیں تھا اس لئے وہ مزار کے دروازے سے لوٹ گیا، عمران خان کو پوری اجازت ہے جتنے جلسے کرنے ہیں کرلو، جلسے کی اجازت شہر سے باہر اس لئے دی گئی تاکہ سیکیورٹی فراہم کی جاسکے۔


مزید پڑھیں : اختیارات کا رونا نہیں روتا، کام کرتا ہوں، مراد علی شاہ


انکا کہنا تھا کہ عمران خان جو چاہیں کرلیں سندھ کے عوام پیپلزپارٹی کوسپورٹ کرتے ہیں، 2018 میں پورے ملک کے عوام پیپلزپارٹی کو ووٹ کرے گی، سیہون میں جلسہ کرانےوالے ایک کونسلر کی نشست بھی نہیں جیت سکتے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ آصف زرداری کو بطور سابق صدر سیکیورٹی ملتی ہے ، میرے پاس بھی نجی گارڈ نہیں سرکاری سیکیورٹی ہوتی ہے، درگاہ کی زیارت نصیب نہ ہونا یہ عمران خان کی بدقسمتی ہے ، انتظامیہ سے کہا تھا کوئی روک ٹوک نہیں ،سیکیورٹی فراہم کرینگے۔

مرادعلی شاہ کا کہنا تھا کہ کتنے جلسے کرچکےہر بارآکر کہتے ہیں سندھ میں انٹری کرلی ، سندھ کےعوام عمران خان کو قبول نہیں کررہے۔

شرکا نے ہاتھوں میں کشمیری عوام سے یکجہتی کیلئے بینرز اٹھا رکھے ہیں ، وزیر اعلیٰ سندھ نے بھارتی مظالم کےخلاف نعرے بھی لگائے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں