The news is by your side.

Advertisement

سندھ حکومت نے شوگر ملز کو سبسڈی آئین و قانون کے مطابق دی: وزیرِ اعلیٰ سندھ

کراچی: وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے بلاول بھٹو زرداری سے ملاقات کی، جس میں انھوں نے جے آئی ٹی رپورٹ اور ای سی ایل میں نام داخل کرنے کے فیصلوں پر تبادلۂ خیال کیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ اعلیٰ نے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول سے ملاقات کی، ملاقات میں مراد علی شاہ نے سندھ حکومت کی کارکردگی پر بھی بریفنگ دی۔

سبسڈی پر اسمبلی میں موجود تمام جماعتوں نے حمایت کی تھی۔

مراد علی شاہ وزیر اعلیٰ سندھ

دریں اثنا وزیرِ اعلیٰ سندھ نے کہا کہ سندھ حکومت نے شوگر ملز کو سبسڈی آئین و قانون کے مطابق دی، سبسڈی کسی ایک کو نہیں تمام شوگر ملز کو دی گئی تھی۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سبسڈی کی منظوری سندھ اسمبلی سے لی گئی تھی، سبسڈی پر اسمبلی میں موجود تمام جماعتوں نے حمایت کی تھی، سبسڈی دینے کی قرارداد پی ٹی آئی کے خرم شیر زمان نے پیش کی تھی۔

انھوں نے کہا کہ سبسڈی دینے کا فیصلہ صرف حکومت کا نہیں پورے ایوان کا تھا، مجھ پر الزامات عائد کر کے میڈیا ٹرائل کیا جا رہا ہے، کروڑوں لوگوں کا منتخب وزیرِ اعلیٰ ہوں، غلط کام نہ کیا نہ کروں گا۔


یہ بھی پڑھیں:  جعلی اکاؤنٹس کیس: آصف زرداری سمیت 172 افراد کے بیرونِ ملک سفر پر پابندی


مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ شوگر ملز کو سبسڈی دینے کا فیصلہ عوام کے مفاد میں کیا گیا تھا، سندھ حکومت کی آڑ لے کر پوری پارٹی کا میڈیا ٹرائل شروع کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ سابق صدر آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو سمیت متعدد پی پی رہنماؤں کے نام جعلی اکاؤنٹس کیس میں ای سی ایل میں ڈال دیے گئے ہیں۔

وفاقی حکومت نے اس سلسلے میں جے آئی ٹی میں شامل 172 افراد کی فہرست جاری کی ہے، جس میں سابق صدر، بلاول بھٹو، فریال تالپور، وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور سابق وزیر اعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کا نام بھی شامل ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں